باباغلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی کے شعبہ فزیکس میں نینو ٹکنالوجی پر توسیعی لیکچر

سرینگر//باباغلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی کے شعبہ فزیکس میں ’’ نینوٹکنالوجی:  فطری نظام ،انسان، مشین اور مستقبل‘‘پرایک توسیعی لیکچر کا اہتمام کیا گیا۔اس مو قع پر ڈاکٹر پرسنتا کمار پال (نینو بائیو ٹکنالوجی میں قومی سطح کے ماہر) نے ایک بصیرت افروز لیکچر دیا جس میں اساتذہ اور طلبہ نے شرکت کرکے اس پروگرام کو کامیاب بنایا۔ڈاکٹر پرسنتا کمار پال نے کہا کہ نینو ٹکنالوجی آنے والے وقت کی ایک اہم ضرورت کے طور پر سامنے آرہی ہے جو زمانہ مستقبل میں انسان کی روزمرہ ضروریات زندگی کو پورا کرنے میں اپنا ایک اہم کردار ادا کرے گی۔انہوں نے مشینی زندگی پر بھی بھر پور روشنی ڈالی ۔انسان کا مستقبل چونکہ تابناک بنانا آج کے سائنس دانوں کا بنیادی مقصد ہے اور یہ تبھی ممکن ہے کہ آدمی زیادہ سے زیادہ فطری نظام پر غور وتدبر کرے اور اُس میں پوشیدہ اسرار خداوندی کی تلاش میں لگ جائے ۔ انھوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ فزکس کا رول نینو ٹکنالوجی کی دنیا میں بنیادی اوراہم رول کی حیثیت رکھتا ہے کیونکہ اس کے ذریعے انسان کا جسم محفوظ رہ سکتا ہے اور اس میں پرورش پانے والے امراض کا خاتمہ ممکن ہے۔اس پروگرام میں اانجینئرنگ کالج کے ڈین پروفیسر محمد اصغر مہمان خصوصی کے طور پر موجود تھے ۔ان کے علاوہ ڈاکٹر فیروز احمد میر،ڈاکٹر عاشق حسین شاہ کے علاوہ تمام فیکلٹی ممبران اور طلبہ کی ایک بھاری تعداد نے شرکت کرکے اس پروگرام کو چارچاند لگائے۔