ای ڈی کی نوٹس ہتھکنڈے

 سرینگر //حریت(ع) چیئرمین میرواعظ عمر فاروق نے  انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی جانب سے سید علی گیلانی اور محمد یاسین ملک کو نوٹس بھیجے جانے اور  پرانے فرضی کیسوںکو پھر سے زندہ کرکے ان کیسوں کے بل پر قیادت کو نشانہ بنانے کی کوششوںکو مزاحمتی قائدین اور عوام کو مرعوب کرنے کے اوچھے ہتھکنڈے قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے حربوں سے ہم نہ ماضی میں مرعوب ہوئے اور نہ اب ڈرایا دھمکایا جاسکتا ہے۔مرکزی جامع مسجد سرینگر میں نماز جمعہ سے قبل خطاب کرتے ہوئے میرواعظ نے کہا کہ پہلے گزشتہ سال بھارتی تحقیقاتی ایجنسی  NIA کی جانب سے متعدد حریت پسند قائدین اور کارکنوںکو فرضی کیسوں میں پھنسا کر گرفتار کرکے مقید کردیا گیا اور اب ED کے ذریعے یہاں کی مزاحمتی قیادت کو بار بار نشانہ بنانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ میرواعظ نے مشترکہ مزاحمتی قیادت کی جانب سے 26 اور27 اگست کی ہمہ گیر احتجاجی ہڑتال کو ہر سطح پر کامیاب بنانے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ان ایام میں تمام کاروباری اور ہر طرح کی سرگرمیاں بند رہیں گی اور جموںوکشمیر کے تمام حصوں میںمکمل احتجاجی ہڑتال رہیگی اور اگر 27 اگست کو بھارت کی سپریم کورٹ کی جانب سے 35A کے حوالے سے ایسا کوئی فیصلہ آتا ہے جو کشمیری عوام کے مفادات کے منافی ہو تو اسی دن سے ہمہ گیر احتجاجی تحریک چھیڑ دی جائیگی اور عوام کے تمام طبقوں کو چاہئے کہ وہ ذہنی اور فکری طور ہر طرح کے احتجاج کیلئے تیار رہیں۔