اکاونٹس اینڈ ٹریجریز ملازمین کا انتباہ

 
سرینگر//محکمہ اکاونٹس اینڈ ٹریجریز ملازمین نے سرکار کو متنبہ کیا ہے کہ اگر 10دنوں کے اندر انکے مطالبات پورا نہیں کئے گئے تو وہ دوبارہ ہڑتال پر جائیں گے۔اکاونٹس اینڈ ٹریجریز ملازمین کی انجمن کی میٹنگ کے دوران مطالبات کو ایک مرتبہ پھر زیر غور لایا گیا،جس کے دوران متفقہ طور پر اس بات کا فیصلہ لیا گیا کہ اگر سرکار انکے مطالبات کو پورا نہیں کرتی وہ ہڑتال پر جائیں گے۔جس کو عید اور رکھشا بندھن کی وجہ سے موخر کیا گیا تھا۔ایسوسی ایشن نے اس بات کا بھی فیصلہ لیا کہ اس سلسلے میں10دنوں کے بعد ہڑتال کی تاریخ کا اعلان کیا جائے گا۔اس  سے قبل 18 اگست کو محکمہ اکاونٹس اینڈ ٹریجریز نے عید الضحیٰ اور رکھشا بندھن کے موقعہ پر ہڑتال موخر کرنے کا اعلان کیا تھا۔ملازمین انجمن کے صوبائی سربراہ مشتاق احمد مغلو نے بتایا کہ ایسو سی ایشن کا مطالبہ ہے کہ کے ایس افسران کو اکاونٹس سروس سے غیر منسلک کیا جائے،جبکہ50:50 تناسب سے تمام سطحوں پر ڈائریکٹر فائنانس کے عہدے تک ترقیاں یکساں بنیادوں پر دی جائے۔ ملازمین کا مطالبہ ہے کہ مرکزی سرکار کے زیر اثر اکاونٹس اینڈ آڈیٹس محکمہ کی طرز پر تنخواہوں میں تفاوت کو دور کیا جائے،جبکہ گزشتہ40برسوں سے التواء میں پڑے کیڈر کا جائزہ لیا جائے۔ ملازمین نے سرکار سے اپنے مطالبے میں کہا ہے کہ اکاونٹس افسران کے موجودہ کوٹا میں 100فی صد اضافہ کیا جائے،اور اہلیت کی سروس کو بھی3برسوں سے کم کیا جائے۔ ملازمین نے ایس آر ائو43 میں تعلیمی قابلیت کو کم کرنے اور ایس آر او75 میں ترمیم کا بھی مطالبہ کیا ہے۔ملازمین کا کہنا ہے کہ یہ مطالبات گزشتہ ایک دہائی سے زیر التواء ہیں۔