انوکھی فال پر بھاری پسی گر آئی،1500چھوٹی بڑی گاڑیاں درماندہ

بانہال // انوکھی فال کے مقام پر سنیچر کی دوپہر ایک بھاری پسی گر آنے کے سبب شاہراہ گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بند ہو گئی ہے اور شاہراہ پر سینکڑوں گاڑیاں درماندہ ہیں۔ اس دوران حکام نے بتایا کہ اتوار یعنی آج شاہراہ پر کسی بھی سیول گاڑی کو چلنے کی اجازت نہیں ہو گی ۔ سنیچر کو شاہراہ پر وادی سے جموں گاڑیوں کو جانے کی اجازت دی گئی تھی تاہم شاہراہ پر سو میٹر کی ایک بھاری پسی انوکھی فال کے مقام پر گر آئی جس سے 15سو کے قریب گاڑیاں درماندہ ہو کر رہ گئیں ۔ ڈی ایس پی ٹریفک رام بن سریش شرما نے بتایا کہ گرتے پتھروں کے باوجود انوکھی فال ون میں بحالی کا کام جارہی ہے ۔ آئی جی پی ٹریفک الوک کمار نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ سنیچر 2بجے کے قریب جموں سرینگر شاہراہ پر انوکھی فال کے مقام پر 100میٹر کی ایک بھاری پسی گر آئی جس کو صاف کرنے کے حوالے سے بڑے پیمانے پر اقدامات کئے جا رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ1500گاڑیاں، جن میں 4سو سے 5سو چھوٹی اور ایک ہزار بڑی گاڑیاں بانہال کے بیچ درماندہ ہوئی ہیں اور جیسے ہی  سڑک بحال ہو گی تو اُن کو نکالا جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ اتوار کا دن صرف کانوائے کا دن ہے اس دوران کسی بھی گاڑی کو چلنے کی اجازت نہیں ہو گی۔تاہم انہوں نے کہا کہ کانوائے کو دیکھتے ہوئے شاہراہ پر بحالی کا کام زوروں سے جاری ہے ۔ اس دوران ضلع مجسٹریٹ رام بن شوکت اعجاز بٹ کی طرف سے جاری حکم نامہ کے مطابق اتوار کو جموں سرینگر شاہراہ پر ضلع رام کے جواہر ٹنل اور ناشری ٹنل کے درمیان ، بشمول ، رام بن ،بانہال میں سیول گاڑیوں کو صبح 4بجے سے شام 5بجے تک چلنے کی اجازت نہیں ہو گی جبکہ  اس دوران صرف  فورسز کی گاڑیاں چلیں گی۔انہوں نے کہا ہے کہ عام لوگوں کو کس بھی ایمرجنسی کی صورت میں متعلقہ مجسٹریٹوں اور پولیس سے رابطہ کرنا چاہئے اور مکمل جانچ پرتال کے بعد ہی اُن کو شاہراہ پر چلنے کی اجازت ہو گی ۔