ادھمپور سرینگر شاہراہ پر عام ٹرانسپورٹ پر پابندی ، سنڈے مارکیٹ متاثر

سرینگر//ادھمپورسرینگر شاہراہ پر ہفتے میں 2 روز عام ٹرانسپورٹ پر پابندی عائد کرنے کی وجہ سے جہاں لوگوں کو طرح طرح کے مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے وہیں دوسری جانب شہر کے معروف بازار’ سنڈے مارکیٹ ‘ میں روز گار کمانے والے سینکڑوں افراد کا روز گار بری طرح متاثر ہورہا  ہے۔ اتوار کو بازار میں لوگوں کی معمولی تعداد خریداری کرتے ہوئے دیکھی گئی۔سنڈے مارکیٹ میں گذشتہ کئی ہفتوں سے کام کاج بری متاثر ہواہے جس کے نتیجے میں سینکڑوں افراد کا روز گار متاثر ہورہا ہے ۔لالچوک میں گزشتہ کئی سال سے ہر اتوار کو مارکیٹ میںچھاپڑیاں لگانے والے افراد کاکہنا ہے کہ جب سے شاہراہ پر اتوار کو سول ٹریفک کی آمدورفت پر پابندی عائد کی گئی ہے تب سے سنڈے مارکٹ میں الو بولنے لگے ہیں۔ انہوں نے کہا اگر وہ اسے قبل کئی ہزار روپے کی سیل کرتے ہوئے تاہم گزشتہ کئی ہفتوں سے وہ ڈیڑھ سے 2ہزار روپے ہی سیل کرتے ہیں ۔ ریاض احمد نامی ایک جوتے فروش کاکہنا ہے کہ ’میں اتوار کو جوتے فروخت کر کے ہفتے کیلئے روز گار کماتا تھا تاہم ایک ماہ سے زیادہ وقفے سے شاہراہ پر پابندی کی وجہ سے اب وہ3دن کیلئے بھی نہیںکما تے ‘۔ سنڈے مارکٹ کے ساتھ جڑے لوگوں نے کے این ایس کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا اگر یہ سلسلہ جاری رہا تو آنے والے دنوں میں اس بازار میںمزید مندی آ سکتی ہے جو سینکڑوں بے روز گار نوجوانوں اور باقی لوگوں کے روز گار کے متاثر ہونے کا باعث بن سکتا ہے جس کی وجہ سے لوگوں میں غم و غصے کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ خیال رہے وزارات داخلہ نے لیتہ پورہ پلوامہ حملے کے بعد سرینگر جموں شاہرہ پر خود کش حملے کے بعد ہفتے میں دو دن اتوار اور بدھ کو ادھمپور سے بارہمولہ تک عام ٹریفک کے لئے بند رکھا تاہم سرکار نے حکم نامے میں معمولی تبدیلی لا کر اب شاہراہ پر ادھم پور سے سرینگر تک ہی پابندی محدود رکھی ہے ۔