آئی ٹی پارک کی غیر قانونی تعمیر انفورسمنٹ ونگ جموں کے افسران کیخلاف کیس درج

 عظمیٰ نیوز سروس

سرینگر //انسداد بدعنوانی بیورو نے انفورسمنٹ کے افسران/ اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کیا۔ ونگ نے اس وقت کے چیف ٹائون پلانر اور جے ڈی اے کے اس وقت کے وائس چیئرمین نیز فائدہ اٹھانے والے ہلال احمد راتھر کی تصدیق کے نتیجے میں ان الزامات کو دیکھنے کے لیے کہ جے ڈی اے نے پچھلے سائٹ پلان پر ہلال راتھر کے حق میں آئی ٹی پارک کی غیر قانونی طور پر تعمیر کی منظوری دی تھی۔ تین منزلہ عمارت کے لیے اس حقیقت کو جانتے ہوئے کہ غیر قانونی تعمیرات کو ریگولیٹ کرنے کا کوئی بندوبست نہیں ہے۔ تصدیق سے یہ بات سامنے آئی کہ BOCA (JDA) کی جانب سے ہلال راتھر کے حق میں IT پارک کی تعمیر کے لیے پرانی تاریخ کی اجازت ان شرائط کے ساتھ دی گئی تھی کہ عمارت کو صرف IT مقصد کے لیے استعمال کیا جائے گا لیکن NOC حاصل کرنے کے بعد اس نے عمارت کی تعمیر شروع کر دی اور سامنے 5ویں منزل اور پورچ تعمیر کیا، جو کہ منظور شدہ منصوبے کی خلاف ورزی ہے، اس کے علاوہ عقبی جانب G+1 تعمیر کرکے خلاف ورزی کی ۔ تصدیق سے پتہ چلتا ہے کہ انفورسمنٹ ونگ کے اس وقت کے افسران/اہلکار، اس وقت کے چیف ٹائون پلانر اور اس وقت کے جے ڈی اے کے وائس چیئرمین نے اپنے سرکاری عہدوں کا غلط استعمال کرتے ہوئے ہلال احمد راتھر کے ساتھ مل کر جان بوجھ کر مجرمانہ سازش رچی، خاموش تماشائی بنے رہے اور اپنی ذمہ داریاں ادا نہیں کیں جس کے نتیجے میں فائدہ اٹھانے والا بغیر اجازت کے برآمدے کے ساتھ 5ویں منزلہ تعمیر کرنے میں کامیاب ہو گیا اور ساتھ ہی منظور شدہ منصوبے کی خلاف ورزی کر کے سرکاری خزانے کو نقصان پہنچایا۔انفورسمنٹ ونگ کے افسران/اہلکاروں، اس وقت کے چیف ٹائون پلانر اور جے ڈی اے کے اس وقت کے وائس چیئرمین کے ساتھ ساتھ فائدہ اٹھانے والے ہلال احمد راتھر اور دیگر کی جانب سے کوتاہی اور کمیشن کی مذکورہ بالا کارروائیاں سیکشن 5(1) کے تحت قابل سزا جرم ہیں۔