تازہ ترین

سالانہ بڈھا امرناتھ یاترا، یاتریوں کیلئے انتظامات جاری

 پونچھ//ہر سال کی طرح اس بار بھی بڈھا امرناتھ یاترا 17اگست سے شروع ہو رہی ہے۔اس حوالے سے جہاں ضلع انتظامیہ اور پولیس کی جانب سے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جا چکی ہے وہی بجرنگ دل ودیگر ہندو تنظیموں کی طرف سے انتظامات کئے جارہے ہیں ۔بجرنگ دل کے ضلع صدر نیشو گپتا نے اس سلسلہ میںکشمیرعظمیٰ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ بڈھا امرناتھ یاترا ہر سال کی طرح اس بار بھی عقیدت و احترام سے کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں انتظامیہ کمیٹی کی جانب سے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جا چکی ہے اوراگست کی 17تاریخ کو جموں سے پہلا قافلہ پونچھ کیلئے روانہ ہوگا۔انہوں نے کہا کہ یاترا کے دوران بڈھا امرناتھ پر آنے والے قافلوں کے لئے اکھنور اور سندر بنی میں ناشتے کا اہتمام رہے گاجبکہدوپہر کا کھانا راجوری میں ہوگا اور بی جی اور دھندک میں بھی کھانے پینے کااہتمام کیاجائے گا۔انہوں نے کہاکہ پونچھ میں گورنمنٹ ڈگر

کھمبے کئی ماہ قبل گھاڑ دیئے گئے

راجوری //درہال کے چوکیاں علاقے کے وارڈ نمبر سات کے لوگ پچھلے کئی ماہ سے اس بات کا انتظار کررہے ہیں کہ کب بجلی کے ٹرانسفارمر کی تنصیب کی جائے گی ۔ علاقے میں محکمہ بجلی کی طرف سے کھمبے چھ ماہ قبل گھاڑ دیئے گئے تاہم ابھی تک ٹرانسفارمر نصب نہیںہوا۔اس صورتحال سے مقامی لوگوں کو سخت مشکلات کاسامناکرناپڑرہاہے ۔مقامی لوگوں نے کشمیرعظمیٰ سے شکایت کرتے ہوئے بتایاکہ ان کے علاقے میں بجلی اس قدر کم ہوتی ہے کہ بلب بھی دکھائی نہیںدیتا ۔انہوں نے کہاکہ ان کی مانگ ہے کہ نیا ٹرانسفارمر نصب کیاجائے لیکن اسے پورا نہیں کیاجارہا اور محکمہ نے چھ ماہ قبل کھمبے گھاڑ دیئے مگر ٹرانسفارمر کیلئے نہیں معلوم اور کتنا انتظار کرناپڑے گا۔سیاسی کارکن کرامت اللہ ملک نے بتایاکہ نئے ٹرانسفارمر کی تنصیب وقت کی اہم ترین ضرورت ہے جس کی عدم موجودگی سے بجلی کا نظام ہی درہم برہم ہے ۔ رابطہ کرنے پر ایگزیکٹو انجینئر محکمہ بجلی راجور

درہال کو نظرانداز کرنے کا الزام

راجوری //درہال کے لوگوں نے راجوری پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں علاقے کو نظرانداز کرنے کا الزام لگایا۔ سابق کیپٹن محمد اعظم اور دیگر لوگوں نے پریس کانفرنس میں بولتے ہوئے کہاکہ بس اڈہ کی زمین پر اثرورسوخ رکھنے والوں نے قبضہ کرلیاہے لیکن ان کے خلا ف کارروائی نہیں کی جارہی ۔انہوں نے کہاکہ درہال میں سیاحتی ترقی کو فروغ دینے کے بہت زیادہ امکانات ہیں اور اس علاقے میں شکر مرگ جیسے خوبصورت مقام ہیں جو بین الاقوامی سیلانیوں کی توجہ کا مرکز بن سکتے ہیں مگر اس طرف توجہ دینے کی ضرورت ہے جوحکام کی طرف سے نہیں دی جارہی۔انہوں نے کہاکہ درہال بنک برانچ میں عملہ کی قلت کی وجہ سے پورا نظام ہی درہم برہم ہے اورمعززشہریوں کو پریشان ہوناپڑتاہے ۔ انہوں نے کہاکہ لیراں سکول میں کھیل کود کے میدان کیلئے مقامی لوگوں نے اپنی زمین دینے کا اعلان کیاتاہم محکمہ تعلیم کا رد عمل افسوسناک ہے ۔انہوں نے گورنر سے

شاہراہ پر پولیس چیکنگ میں اضافہ

منجاکوٹ//منجاکوٹ میں پولیس کی طرف سے تلاشی کادائرہ وسیع کردیاگیاہے اور شاہراہ پر آنے جانے والی گاڑیوں کو روک ان کی تلاشی لی جاتی ہے ۔ یہ تلاشی کارروائی پندرہ اگست کے پیش نظر کی جارہی ہے ۔ ایس ڈی پی او منجاکوٹ ڈاکٹر امتیاز چوہدری کی نگرانی اور ایس ایچ او منجاکوٹ اعجا ز حیدر کی قیادت میں دن بدن چیکنگ کا سلسلہ سخت ہوتاجارہاہے ۔بدھ کے روز بھی دن بھر پولیس اہلکار گاڑیوں کو روک کر ان کی تلاشی لیتے رہے ۔  

کھڑی دھرمسال کے رزاق کی موت

سرنکوٹ //پونچھ کے کھڑی دھرمسال وارڈ نمبر تین سے تعلق رکھنے والے محمد رزاق کے پسماندگان دو سال سے اس بات کا انتظار کررہے ہیں کہ انہیں کب انصاف ملے گاتاہم پولیس کی طرف سے اس سلسلے میں اب تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی ۔باغ حسین ولد نائیک احمد اور متوفی محمد رزاق کی بیوہ نے بتایاکہ انہیں باربار دھمکیا ں مل رہی تھیں لیکن کسی نے اس کا نوٹس نہیں لیا اور بالآخر رزاق کو قتل کردیاگیاجس کے بعد بھی کارروائی نہیں ہوئی ۔ رزاق کی بیوہ کاکہناہے کہ وہ اس دن مینڈھر میں کسی رشتہ دار کے گھر شادی میں گئی ہوئی تھی جب اسے خبر ملی کہ محمد رزاق ٹریڈ سنٹر سے کام سے واپس نہیںلوٹا ۔انہوں نے بتایاکہ سبھی کی پریشانی بڑھ گئی اور محمد رزاق کی تلاش شروع کی گئی جس کی نعش ایک نالہ سے ملی ۔انہوں نے بتایاکہ اس کا شوہر 24اپریل 2016کولاپتہ ہواجس کے دو روز بعد یعنی چھبیس اپریل کو اس کی نعش ملی جس پر پولیس نے ایف آئی آر زیر

منڈی میں ہفتہ حسینی کی مجالس کا اہتمام

منڈی //منڈی میں انجمن تنظیم المومنین کی طرف سے سالانہ حسینی ہفتہ کی مجالس کا اہتمام کیاگیاہے۔ان مجالس میں خطاب کیلئے بیرون ریاست کے عالم دین مولانا سید مہدی حسن زیدی آئے ہوئے ہیں ۔مولانانے کہاکہ امام حسین ؑ نے اپنی اور اپنے ساتھیوں کی قربانی دے کر اللہ کے دین کو زندہ جاوید کردیا ۔انہوں نے کہاکہ امام ؑ کی قربانی کسی ایک مذہب کیلئے نہیں بلکہ پوری انسانیت کیلئے تھی ۔مولانا نے کہاکہ پیغمبر اسلام ؐ کا ارشاد ہے کہ امام حسین ؑ ہدایت کاچراغ اور نجات کی کشتی ہے اور دنیا کے ہر ایک انسان کو اس چراغ سے روشنی لینی چاہئے اور اس نجات کی کشتی میں سوار ہوکر اپنی زندگی سنوارنی چاہئے ۔انہوں نے کہاکہ خدا کے دین کو مٹانے کیلئے یزید جیسا فاسق و فاجر صف آرا ہواجس کو امام ؑ نے کربلا کے تپتے میدان میں اپنی قربانی دے کر ایسا جواب دیا کہ اس کی مثال تاقیامت تک نہیں ملے گی ۔اس دوران شب روز کانپورہ اور شباب جلالپ

مزید خبرں

۔35اے کے تحفظ پر زور پونچھ//نیشنل کانفرنس کے بلاک صدر اور او بی سی کے ضلع صدر رشید شاہ پوری نے دفعہ 35اے کے تحفظ پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ریاست جموں و کشمیر کو حاصل خصوصیت کچھ لوگوں کو برداشت نہیں ہو رہی اور انہوں نے اس کوختم کرنے کیلئے عدلیہ کاسہارالیاہے ۔اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ آئین ہند کے35-Aاور دفعہ 370کے ساتھ چھیڑ چھاڑ  ریاست کی عوام کے جذبات کے ساتھ کھلواڑ کرنا ہے جسے کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کیاجائے گ۔انہوں نے کہا کہ اگر دفعہ35-Aکو تحفظ نہ دیا گیا تو ریاست کے حالات مزید خراب ہونگے اور پھر ان کو ٹھیک کرنا بڑا مشکل ہوگا۔انہوں نے مرکزی سرکار کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ وہ پورے ملک میں افرا تفری مچائے ہوئے ہے اور گائے کی حفاظت کے نام پرتو کبھی کسی دوسرے معاملے پر بے گناہ شہریوں کا قتل کیاجارہاہے ۔انہوں نے کہا کہ دفعہ 35-Aہو یا کہ دفعہ370، یہ کسی ایک فرق