تازہ ترین

سماجی برائیاں۔۔۔۔ سنجیدہ تحرّک کی ضرورت !

 کچھ عرصہ سے ہمارے سماج کے اندر ایسی تبدیلیاں وقوع پذیر ہو رہی ہیں، جن کے بارے میں ہمارےآباء و اجداد نے کبھی سوچا بھی نہیں ہوگا کہ کشمیری سماج میں اخلاقی اقدار اس سطح تک پامال ہوسکتی ہیں، جہاں ایک شیرخوار کی عزت وناموس بھی محفوظ نہیں۔ سمبل کے دل دہلانے والے واقع نے رسانہ کی یادتازہ کی ہے، جس پر بہت سیاست کی گئی اور ملزم کو بچانے کےلئے کئی سیاسی جماعتوں نے ایسی چلتر بازیاں کیں کہ جس سے انسانیت کی بنیادیں مہندم کرنے والا وہ واقع فرقہ واریت کا رنگ اختیار کر گیا تھا۔ نتیجہ یہ ظاہر ہوا کہ متعلقہ اداروں کو اسکی تحقیق و تفتیش میں انواع و اقسام کے دبائو کا سامنا رہا، جس کی وجہ سے حقائق سامنے آنے میں تاخیر ہوگئی، چنانچہ واقع کو پیش آئے ہوئے کم و بیش ڈیڑھ سال کا عرصہ ہونے کو آرہا ہے لیکن معاملہ ابھی تک فیصل نہیں ہوا ہے۔ سمبل کا واقعہ بھی کچھ مختلف نہیں ہے۔ اس نے بھی ہمارے سماج کی چولیں