تازہ ترین

آفات سےنمٹنے کے سرکاری دعوے سراب ثابت!

گزشتہ د و روز سے ہو رہی برفباری نے کشمیر، پیر پنچال اور چناب خطوں میں تباہی کا جو سامان کیا ہے، اسکا اندازہ لگانا اگرچہ مشکل نہیں تھا، کیونکہ محکمہ موسمیات کی طرف سے درمیانہ سے بھاری پیمانے کی برفباری کی پیش گوئی کی گئی تھی، لیکن افسوس کا مقام ہے کہ رواں برس کی خراب موسمی حالت سے کوئی سبق حاصل کرنے کی بجائے، ایسا ثابت ہوا ہے کہ انتظامیہ خواب خرگوش میں تھی۔ جبھی تو فی الوقت مذکورہ بالا تینوں خطوں میں رابطہ سڑکیں بند ہونے کی وجہ سے عبور و مرور کا سلسلہ بُری طرح متاثر ہوگیا ہے۔ روز مرہ زندگی کی بنیادی ضرورت بجلی کی فراہمی کا عالم یہ ہے کہ شہر اور قصبہ جات میں انتظامیہ وقفو ںوقفوں کے ساتھ اُسے برقرار رکھنے میں کسی حد تک کامیاب رہی ہے مگر دیہات اور دور دراز علاقوں کا خدا ہی حافظ ہے۔ وادی کشمیر کے شمال اور جنوب میں تازہ برفباری سے برقی سپلائی کا ڈھانچہ ہی جیسے مہندم ہو کر رہ گیا ہے۔ اس میں ک