بانڈی پورہ اور اوڑی کے کئی سکولوں میں اساتذہ کی کمی،طلاب پریشان

بانڈی پورہ+اوڑی// بانڈی پورہ میں تعلیمی نظام درہم برہم ہوکررہ گیا ہے ۔ جہاں شیخ پورہ خیار مڈل اسکول میں فقط چار اساتذہ تعینات ہیں وہیں ٹھنگاٹ مڈل اسکول میں6 اساتذہ ہی تعینات ہیں ۔ان سکولوں میں زیر تعلیم کئی طالب علموں اور اُن کے والدین کا کہنا ہے کہ محکمہ تعلیم کی نوٹس میں یہ معاملہ لانے کے باوجد کوئی کارروائی نہیں کی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ کئی بار چیف ایجوکیشن آفیسر اور دیگر افسران کو آگاہ کیا گیا لیکن انہوں نے کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی۔مقامی لوگوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر اور گورنر انتظامیہ سے اپیل کی کہ وہ معاملے کی تحقیقات کرائیں اورضلع بانڈی پورہ میں محکمہ تعلیم کو پٹری پر لانے کے لئے کوئی مثبت اقدامات کریں۔ادھراوڑی کے نامبلہ نامی گائوں میں محکمہ تعلیم نے ایک سال قبل گورنمنٹ ہائی سکول کا درجہ ہائر سیکنڈری تک بڑھادیا مگر تدریسی عملے کی عدم دستیابی کی وجہ سے سکول میں زیر تعلیم

گلمرگ میں غیر قانونی تعمیرات کیخلاف پریس کالونی میں احتجاج

سرینگر//گلمر گ میںغیر قانونی تعمیرات کے خلاف گلمر گ وٹنگمر گ سیول سو سائٹی سے افراد نے پریس کالونی لالچوک میںاحتجاج کیا۔ احتجاجی افراد نے گلمرگ میں غیر قانونی طور تعمیر ہو رہے پختہ عمارتوں اور ہوٹلوں پر روک لگا نے کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوںنے کہا کہ جائز اور ناجائز طریقے سے گلمر گ میںکنکریٹ تعمیرات کی بھرمار ہورہی ہے جس سے اس سیاحتی مقام کے ماحول اور خوبصورتی پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔سی این ایس کے مطابق ایک احتجاجی نے بتایا کہ’وہ زمانہ گزر گیا جب گلمرگ میں قوانین کے مطابق تعمیرات کی اجازت ملتی تھی،آج اگر آپکے پاس پیسہ اور سفارش ہے تو آپ یہاں کہیں بھی،کبھی بھی اور کوئی بھی تعمیر کھڑا کر سکتے ہیں‘‘۔مذکورہ احتجاجی نے کہاکہ دن اور رات میں سینکڑوں ٹرک گلمرگ کی وادی میں تعمیراتی میٹریل ڈال کرجاتے ہیں لیکن گلمرگ ڈیولپمنٹ اتھارٹی اور میونسپلٹی اہلکار اس غیرقانونی کام کی طر

ڈاکٹر فاروق کا راجوری سڑک حادثے پر اظہارِ رنج

سرینگر// نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور نائب صدر عمر عبداللہ نے راجوری میں کوٹرنکہ بدھل سڑک حادثہ پر رنج و الم کا اظہار کیا ہے۔ دونوں لیڈران نے حادثے میں لقمہ اجل بنے افراد کے اہل خانہ کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے گورنر انتظامیہ سے اپیل کی کہ وہ زخمی ہوئے افراد کو بہتر علاج و معالجہ فراہم کرے اور لقمہ اجل بنے افراد کے پسماندگان کے حق میں ایکس گریشیا ریلیف فراہم کی جائے۔   

غلام حسن بانڈے اور عبدالاحد ترمبوکے انتقال پر تعزیت پرسی کا سلسلہ جاری

سرینگر//سجادہ نشین درگاہ حضرتبل غلام حسن بانڈے کی وفات پر تعزیت پرسی کا سلسلہ جاری ہے۔ حریت (ع)کے چیئرمین میرواعظ محمد عمر فاروق نے کشمیر کی تین سرکردہ اور اہم سماجی، تجارتی اور مذہبی شخصیات جن میں سرکردہ تاجر عبدالاحد ترمبو، سجادہ نشین درگاہ حضرتبل غلام حسن بانڈے،معروف ماہر تعلیم پروفیسر عبدالرحمان وانی کے برادر اصغر محمد یوسف وانی ساکن بوٹہ کدل کی وفات پر صدمے کا اظہار کرتے ہوئے مرحومین کی سماجی ، مذہبی اور تعلیمی خدمات پر انہیں خراج عقیدت ادا کیا ہے۔ میرواعظ نے عبدالاحد ترمبو کو خراج عقیدت ادا کیا۔ میرواعظ نے آثار شریف حضرتبل کے سجادہ نشین غلام حسن بانڈے کو ان کی درگاہ حضرت بل میںطویل خدمات کو خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ اس خانوادے نے کشمیر میں دینی، ملی اور مذہبی اقدار کی آبیاری میں ایک قابل قدر کردار ادا کیا ہے۔مرحوم کے انتقال کی خبر سن کر میرواعظ بانڈے منزل درگاہ پہنچے جہاں

کیرن میں بنیادی سہولیات کا فقدان | بیشتر تعمیراتی پروجیکٹ کئی برسوں سے تشنۂ تکمیل

سرینگر // کیرن میں بنیادی سہولیات کا فقدان پائے جانے کی وجہ سے عوام کو سخت مشکلات درپیش ہیں۔ قصبہ میں زیر تعمیر ہسپتالی عمارت ، سکول ، پنچایت گھراور ریسٹ ہاوس کے علاوہ کئی سڑکیں عرصہ دراز سے تشنۂ تکمیل ہیں ۔ ہائیر سیکنڈری سکول کیرن کی لیبارٹری کی عمارت کتوں کی آماجگاہ بن چکی ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ عمارت 2006سے تشنۂ تکمیل ہے۔اسی طرح کیرن کیلئے ایک ہسپتال کی نئی عمارت پر 2012میں شروع کیا گیا لیکن ہنوز تشنۂ تکمیل ہے ۔یہی نہیں بلکہ کیرن میں کئی سال قبل آئے تباہ کن سیلاب کی وجہ سے ڈاک بنگلہ کی عمارت تباہ ہو گئی اور نئی عمارت پر 2012میں شروع کیا گیالیکن ہنوز نامکمل ہے ۔یہی نہیں بلکہ پنچایت گھر منڈیاں 2009سے زیرتعمیر ہے ۔اسی طرح ہائی سکول کنڈیاں کی عمارت پر بھی کام ادھورا ہی چھوڑا گیااور یہ عمارت 2016سے تشنۂ تکمیل ہے۔اس سرحدی علاقے میںکئی پل اور سڑکیں بھی عرصہ دراز سے زیر تعمیر ہ

موجودہ صورتحال پی ڈی پی۔بھاجپا اتحاد کی دین

سرینگر//وادی میں موجودہ دگرگوں صورتحال پر زبردست تشویش اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے مرکزی حکومت اور گورنر انتظامیہ پر زور دیا ہے کہ عوام کیخلاف سخت گیر پالیسی فوری طور پر بند کرکے افہام و تفہیم کا راستہ اختیار کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے کیونکہ گذشتہ4سال سے جاری یہ پالیسی نہ صرف سرے سے ہی ناکام ہوئی ہے بلکہ اس کے تباہ کن نتائج سامنے آئے ہیں۔جنرل سکریٹری نے اپنے خطاب میں کہا کہ سابق پی ڈی پی بھاجپا حکومت نے مرکز کی غلط پالیسیوں کو من و عن ریاست میں عملایا، جس کا نتیجہ ہم آج بخوبی زمینی سطح پر دیکھ سکتے ہیں۔ عوام کا سڑکوں پر سفر کرنا بھی اب مصیبت کا سامان بن کر رہ گیا ہے۔ سڑکوں اور شاہراہوں پر بار بار ٹریفک کی نقل و حرکت روک دی جاتی ہے اور مسافروں خصوصاً بیماروں، بچوں ، بزرگوں اور سیاحوں کو زبردست کوکوفت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ

شرائے ٹنگمرگ میں آتشزدگی سانحہ | بیٹی کے بعد باپ نے بھی دم توڑدیا

بارہمولہ //شرائے ٹنگمرگ بارہمولہ میں سوموار کو ایک مرتبہ پھر یتو خاندان پر اُس وقت قیامت ٹوٹ پڑی جب ڈیڑھ ماہ قبل آگ کی ایک واردات میں لقمہ اجل بننے والیبیٹی کے بعد اب باپ بھی  زندگی کی جنگ ہارگیا۔ معلوم ہوا ہے نذیر احمد یتو سوموار کی صبح صورہ میڈکل انسٹی ٹیوٹ میں ایک ماہ سے زیادہ عرصہ سے زیر علاج رہنے کے بعد زخموں کے تاب نہ لاکر دم ٹوڑ بیٹھا ۔ اس سے قبل نذیر احمد کی  18 سالہ بیٹی سفینہ نذیر نے 18 جون کو ایک ماہ بعد زندگی کی جنگ ہارگئی تھی ۔ واضح رہے کہ دونوں باپ بیٹی ڈیڑھ ماہ قبل اپنے ہی مکان کے صحن میںآگ لگنے سے زخمی ہوگئے تھے جس کے بعد دونوں باپ بیٹی کو اگر چہ نذدیکی اسپتال پہنچایا گیا تھا تاہم ڈاکٹروں نے دونوں کو صورہ میڈیکل انسٹی ٹیوٹ منتقل کیا تھا جس کے بعد دنوں باپ بیٹی نے دم توڑا۔سابق وزیر غلام حسن میر ،سابق ممبر اسمبلی گلمرگ محمد عباس وانی ،پی ڈی پی کے شبیر احمد میر

مزید خبریں

گورنر سے امیتابھ مٹو اوراویناش رائے ملاقی سری نگر//معروف ماہر تعلیم اور دانشور پروفیسرامیتابھ مٹو نے یہاں راج بھون میں گورنر ستیہ پال ملک کے ساتھ ملاقات کی۔پروفیسر مٹو نے ریاست کی جامع ترقی اور اعلیٰ تعلیم شعبۂ کے فروغ کو یقینی بنانے کے لئے اپنے خیالات گورنر کے ساتھ بانٹے۔گورنر نے پروفیسر مٹو پر زور دیا کہ و ہ عوامی بہبود کے لئے اپنی کوششیں جاری رکھیں۔جموں وکشمیر میں بی جے پی انچارج اویناش رائے کھنہ نے یہاں راج بھون میں گورنر ستیہ پال ملک کے ساتھ ملاقات کی۔اس موقعہ پر انہوں نے ہندی زبان میں لکھی گئی اُن کی کتاب سماج چنتن کی کاپی گورنر کو پیش کی۔اس کتاب میں انہوں نے دورِ جدید کے سماج کو سماجی سطحوں پر درپیش مسائل کو حل کرنے سے متعلق اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے اور اس میں نشیلی ادویات کی بدعت پر قابو پانے، یتیموں کے مسائل، تعلیم و طبی نگہداشت کے منظر نامے پر توجہ مرکوز کی گئی ہے۔گور

تازہ ترین