تازہ ترین

سرینگر سے بارہمولہ تک ہائی وے پابندی ہفتے میں ایک دن تک محدود: حکام

سرینگر/کشمیر شاہراہ پر سرینگر سے بارہمولہ تک سیولین ٹریفک کی نقل و حمل پر پابندی کو ہفتے میں صرف ایک دن، یعنی اتوار تک محدود کیا گیا ہے۔ سرکاری ذرائع کے مطابق اس فیصلے پر کل یعنی اتوار سے عملدر آمد ہوگا۔ مذکورہ ذرائع نے کہا کہ اب سے بدھ کو شاہراہ پر سرینگر سے بارہمولہ تک سیولین ٹریفک کی نقل و حمل پر کوئی پابندی نہیں ہوگی۔ انہوں نے تاہم وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ البتہ سرینگر سے بارہمولہ تک ہفتے میں دو روزہ پابندی کا سلسلہ جاری رہے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ پابندیوں پر مزید غور کے بعد ان میں مزید نرمی لائی جائے گی۔ سرکاری ذرائع کے مطابق سرینگر سے اُدھمپور تک پابندیوں کے دونوں دنوں، یعنی اتوار اور بدھ اور اتوار کو سرینگر سے بارہمولہ تک مقامی انتظامیہ سیولین ٹریفک کو اُسی طرح چلنے کی اجازت دے گی جس طرح پہلے دی جاتی تھی۔ واضح رہے کہ گذشتہ مہینے کشمیر شاہراہ پر ہر ہفتے دو

سرینگر۔جموں شاہراہ پر پتھر کھسکنے سے مسلسل چوتھے روز ٹریفک متاثر

سرینگر/سرینگر۔جموں شاہراہ پر سنیچر کو مسلسل چوتھے روز پہاڑیوں سے پتھر کھسکنے کی وجہ سے ٹریفک کی نقل و حمل متاثر رہی۔ حکام کے مطابق آج بھی شاہراہ پر کسی جانب سے گاڑیوں کو چلنے کی اجازت نہیں دی گئی ۔ پہلے گذشتہ تین روز سے شاہراہ پر پسیاں گر آنے کی وجہ سے ٹریفک متاثر رہی جبکہ آج پہاڑوں سے پتھر کھسکنے کی وجہ سے گاڑیاں نہیں چلیں۔ انہوں نے کہا کہ شاہراہ پر رامبن ضلع میں انوکھی فال، بیٹری چشمہ اور موکے موڑ پر پہلے پسیاں گر آئی تھیں اور بعد میں پتھر کھسکنے لگے۔ حکام نے مذکورہ شاہراہ کو گذشتہ بدھ سے بند رکھا ہے۔  

راجوری میں دو لڑکوں کی لاشیں لٹکتی حالت میں بر آمد

سرینگر/ضلع راجوری میں سنیچر کو دو لڑکوں کو لٹکتے ہوئے مردہ حالت میں پایا گیا جس کے بعد پولیس نے معاملے کی تحقیقات شروع کی۔ پولیس ذرائع کے مطابق ونی بھالا عرف ونی ساکنہ جواہر نگر راجوری اور سورائو سنگھ ولد رگبھیر سنگھ ساکنہ خدارین، کالا کوٹ کی لاشیں لٹکتی حالت  میں  بر  آمد  کی  گئیں   جس کے بعد معاملے کی تحقیقات کا آغاز کیا گیا ہے۔ پولیس نے کہا کہ لاشوں کو لیکرقانونی لوازمات پوری کی جارہی ہیں ۔  

کے ای اے چیئر مین یاسین خان دلی میں این آئی اے پوچھ تاچھ کے بعد لوٹ رہے ہیں

سرینگر/کشمیر میں تجارتی انجمنوں کے وفاق، کشمیر اکونومکس الائنس (کے ای اے) کے چیئر مین محمد یاسین خان سنیچر کونئی دلی سے لوٹ رہے ہیں جہاں اُنہیں قومی تحقیقاتی ایجنسی( این آئی اے) نے مبینہ فنڈنگ کیس کے سلسلے میں پوچھ تاچھ کیلئے طلب کیا تھا۔ خان کو قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے18اپریل کو اپنے صدر دفتر واقع نئی دلی طلب کیا تھا۔  یہ خان کی این آئی اے صدر دفتر پر دوسری طلبی تھی۔اس سے قبل ستمبر2017کو بھی خان کو پوچھ تاچھ کیلئے سمن کیا گیا تھا۔اُس وقت خان کی دلی طلبی کیخلاف کشمیر کی تاجر برادری نے احتجاجی ہڑتال کرائی تھی۔ ذرائع کے مطابق این ائی اے نے اسی کیس کے سلسلے میں سینئر علیحدگی پسند لیڈر سید علی گیلانی کے بیٹے، نسیم گیلانی کو بھی22اپریل کو پوچھ کیلئے دلی طلب کیا ہے۔  

پلوامہ کا نوجوان لاپتہ،اقرباء کی بازیابی میں عوام سے تعاون کی اپیل

سرینگر/جنوبی کشمیر میں ضلع پلوامہ کے ترال علاقے میں 10اپریل سے ایک نوجوان لاپتہ ہے۔مذکورہ لاپتہ نوجوان کے گھروالوں نے اُس کی بازیابی کیلئے عوام کا تعاون طلب کیا ہے۔ ریاض احمد شاہ(30) ساکنہ گلاب باغ، ترال10اپریل کو گھر سے نکلنے کے بعد واپس نہیں لوٹا۔ ریاض کے بڑے بھائی نظیر احمد شاہ کے مطابق 10اپریل کو اُس نے ریاض کے ساتھ فون پر بات کی۔ ''اُس نے کہا کہ وہ اونتی پورہ میں ہے''۔ نظیر نے کہا''یہ میری اُس سے آخری بات تھی، جب سے اُس کا فون نیٹ ورک سے باہر آرہا ہے''۔ متاثرہ گھرانے نے متعلقہ پولیس تھانے میں ریاض کے لاپتہ ہونے کی رپورٹ بھی درج کرائی ہے جس کے بعد پولیس نے اُنہیں بتایا کہ ریاض 10اپریل شام چار بجے جموں میں کسی ہوٹل میں تھا۔ نظیر نے کہا''ہمارے ایک جاننے والے نے ریاض کو14اپریل کو ترال بس اسٹینڈ میں دیکھا لیکن وہ ریاض کے ل

کشمیر اور بھارت کے باقی حصوں میں یکساں قوانین ہونے چاہیں: شیو سینا

 سرینگر/شیو سینا کے سربراہ اُدھائو ٹھاکرے نے کہا ہے کہ جموں کشمیر اور بھارت کے باقی ماندہ حصوں میں یکساں قوانین رائج ہونے چاہیں۔ انہوں نے کانگریس پر برستے ہوئے کہا ''کانگریس دفعہ370کا خاتمہ نہیں چاہتی ہے''۔ اورنگ آباد میں ایک عوامی جلسے سے تقریر کرتے ہوئے ٹھاکرے نے کہا''فاروق عبد اللہ اور محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہ دفعہ370کے خاتمے کے بعد کشمیر میں ترنگا لہرانے والا کوئی نہیں ہوگا۔کانگریس بھی دفعہ370ختم کرنے کیخلاف ہے۔ ہمارا ماننا ہے کہ پورے بھارت کے اندر یکساں قوانین رائج ہونے چاہیں''۔ ٹھاکرے نے مزید کہا کہ شیو سینا ایسا وزیر اعظم چاہتی تھی جو پاکستان پر حملہ کرے، اسی لئے شیو سینا بھاجپا کی حمایتی بن گئی۔  

ممبئی حملوں کا جواب دیا گیا ہوتا تو پلوامہ حملے کی نوبت نہیں آتی: مودی

سرینگر/وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ اگر2008میں ممبئی حملوں کا جواب دیا گیا ہوتا تو 2019میں پلوامہ حملہ نہیں ہوا ہوتا۔مودی نے یہ بھی کہا کہ بالاکوٹ میں بھارت کی ائیر اسٹرائیک کامیاب تھی اور پاکستان نے چالیس روز تک میڈیا کو بالا کوٹ کے علاقے کا دورہ کرنے کی اجازت نہیں دی۔ مودی نے' ٹائمز نو' کو دئے گئے ایک انٹریو میں کہا کہ کوئی بھی محب وطن بھارتی، پلوامہ حملے میں چالیس سی آر پی ایف اہلکاروں کی ہلاکت کے بعد ہاتھ پہ ہاتھ دھرے نہیں بیٹھ سکتا تھا۔ انہوں نے کہا''اگر ایسے وقت ہم خاموش رہتے تو مجرم سوچتے کہ حکومت مضبوط نہیں ہے اور اُنہیں ایسے حملوں کی عادت ہوجاتی۔اگر 2008میں ممبئی حملوں کا بھر پور جواب دیا گیا ہوتا تو پلوامہ حملے کی نوبت نہیں آتی''۔ مودی نے کہا کہ امریکہ میں 2011حملوں کے بعد کوئی بڑا حملہ نہیں ہوا کیونکہ اُنہوں نے (امریکہ نے) مضبوطی کا

جماعت اسلامی کے نام وجہ بتاؤ نوٹس جاری

سرینگر/غیر قانونی سرگرمیوں( پریوینشن) ٹربیونل دہلی نے جماعت اسلامی جموں وکشمیر کے نام جمعہ کو ایک وجہ بتاؤ نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اس بات کی وضاحت کرے کہ اُن کی جماعت جسے غیر قانونی قرار دیا گیا ہے ، کی غیر قانونی سرگرمیوں( پریوینشن) سے متعلق ایکٹ1967 کے تحت تصدیق کیوں نہ کی جائے۔ ایک سرکاری بیان کے مطابق غیر قانونی سرگرمیوں( پریوینشن) سے متعلق ٹربیونل کے رجسٹرار کی طرف سے دہلی ہائی کورٹ بلڈنگ سے جاری ایک مکتوب میں جماعت اسلامی کے نام ایکٹ کی دفعہ4 کی سب سیکشن(2 ) کے تحت نوٹس جاری کیا گیا ہے اور اسے 30 دِن کا وقت دیا گیا ہے تا کہ وہ اس بات کی وضاحت کرے کہ اُن کی جماعت جسے غیر قانونی قرار دیا گیا ہے ، کی ایکٹ کی سیکشن4 (3 ) کے تحت ڈکلیریشن کی توثیق کے لئے ایک حکم نامہ جاری کیوں نہ کیا جائے۔ ٹربیونل نے جماعت اسلامی سے کہا ہے کہ وہ اپنے اعتراضات اور جوابی حلف بیانات سماعت

وسطی کشمیر میں پولنگ کے دِن کئی مقاما ت پر سنگ بازی:انتظامیہ

سرینگر/ایک سرکاری بیان میں جمعہ کو بتایا گیا کہ سرینگر پارلیمانی حلقہ میں گذشتہ روز ہوئی ووٹنگ کے دوران مختلف علاقوں میں حفاظتی عملے اور پولنگ عملے پر پتھر بازی کے کئی واقعات پیش آئے۔ بیان کے مطابق ''چناؤ عمل کے دوران مختلف مقامات پر شر پسند عناصر نے حفاظتی عملے پر شدید پتھر بازی کی ۔ تا ہم حفاظتی عملے نے امن و قانون کی صورتحال سے نمٹنے کے دوران انتہائی صبر و تحمل سے کام لیا''۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ مختلف مقامات پر پتھر بازی کی وجہ سے2 ڈی ایس پیز سمیت پولیس اور حفاظتی عملے کے کئی اہلکار زخمی ہوگئے۔ بیان میں کہا گیا کہ اس طرح کے ایک واقعہ میں حیدر پورہ میں ایک عام ڈرائیور محمد یٰسین ڈار عمر22 سال کو سر میں شدید چوٹیں آئیں۔ وہ ہسپتال میں زیر علاج ہے اور اس کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ بیان میں عام لوگوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ پولنگ ڈیوٹی پر تعینا

ملک کیلئے سب سے بُرے دن ہیں: کرکرے سے متعلق ٹھاکر کے بیان پر محبوبہ کا رد عمل

سرینگر/سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے جمعہ کو کہا ''یہ ملک کیلئے سب سے بُرے دن ہیں''۔ محبوبہ دہشت گردی مخالف اسکارڈ کے سابق سربراہ ہیمنت کرکرے سے متعلق بھوپال کی بھاجپا اُمیدوار اور مالیگائوں دھماکہ کیس2008 کی ملزم ،سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکرکے بیان پر تبصرہ کررہی تھی۔ محبوبہ نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا''میرے خیال میں ملک کیلئے یہ سب سے بُرے دن ہیں جب آپ لوگوں کو ایسے اُمیدوار دیتے ہو جو ہیمنت کرکرے جیسے شہید کے بارے میں غلط زبان استعمال کرتے ہیں''۔ ٹھاکر نے کرکرے کے بارے میں بتایا کہ وہ ممبئی حملوں میں صرف اُس کی بد دعا سے مرگیا کیونکہ اُس نے (کرکرے نے) اُس کے ساتھ خراب سلوک کیا تھا۔ کرکرے اپنے دو ساتھیوں سمیت ممبئی حملوں میں جان بحق ہوا تھا۔ بھاجپا نے ٹھاکر کو بھوپال سیٹ کیلئے پارٹی کا منڈیٹ دیا ہے جہاں اُس کا براہ راست مقابلہ کانگ

کنٹرول لائن سے آر پار تجارت روکنا بھاری نقصان کا باعث ہوگا: میرواعظ

سرینگر/حریت کانفرنس (ع) کے چیئر مین میرواعظ عمر فاروق نے جمعہ کو کہا کہ کنٹرول لائن کے آر پار تجارت روکنا کشمیری عوام کیلئے بھاری نقصان کا باعث ہوگا۔ میر واعظ نے کہا کہ لوگوں کے آپسی رابطے بڑھانے اور رشتوں کو استوار کرنے کے بجائے بھارت کی موجودہ سرکار اس کے برعکس اقدامات کررہی ہے۔ میرواعظ نے جامع مسجد میں نماز جمعہ سے قبل اپنے خطاب میں کہا'' یہ انتہائی بد قسمتی کی بات ہے کہ لوگوں کے آپسی رابطے بڑھانے کے بجائے ،جو کچھ بھی واجپائی کے وقت میں حاصل کیا گیا تھا، اُس سب کو روکا جارہا ہے۔ایسے اقدامات کشمیری عوام کو بھاری نقصان سے دوچار کرسکتے ہیں''۔ یاد رہے کہ مرکزی حکومت نے گذشتہ روز شام کو ایک حکمنامے میں سلام آباد ،اُوڑی اور چکندا باغ،پونچھ کے راستوں سے کنٹرول لائن کے آر پار ہونے والی تجارت پر فی الحال روک لگادی۔ تاجر برادری نے اس اقدام کو منقسم جموں کشمیر ک

سرینگر۔جموں شاہراہ پر درماندہ گاڑیوں کو کشمیر کی طرف چلنے کی اجازت

سرینگر/سرینگر ۔جموں شاہراہ پر جمعہ کو درماندہ گاڑیوں کو سرینگر کی طرف چلنے کی اجازت دیدی گئی۔ اس سے قبل اُن پسیوں کو شاہراہ سے ہٹایا گیا جن کی وجہ سے اس کو گذشتہ روز صبح بند کیا گیا تھا۔ یہ پسیاں ضلع رامبن میں بیٹری چشمہ کے آس پاس گر آئی تھیں۔ سرکاری ذرائع کے مطابق فی الحال اُدھمپورسے رامبن علاقے میں درماندہ اُن گاڑیوں کو ہی آگے بڑھنے کی اجازت دی گئی ہے جن کا رُخ کشمیر کی طرف تھا۔  

راجوری میں 34سالہ شہری کواپنے ہی گھر کے اندر لٹکا ہوا پایا گیا

سرینگر/ضلع راجوری کے ایک گائوں میں جمعہ کو ایک شہری کو مردہ حالت میں لٹکا ہوا پایا گیا۔ یہ واقعہ ضلع کے سیوٹ نامی گائوں میں پیش آیا جہاں رام لال ولد کرشن لال ،کو مردہ حالت میں لٹکا ہوا پایا گیا۔ اطلاعات کے مطابق34سالہ رام لال کو آج صبح اپنے گھر کے اندر چھت سے لٹکا ہوا پایا گیا۔ پولیس نے لاش تحویل میں لیکر معاملے کی تحقیقات شروع کی ہے۔  

کنٹرول لائن سے آر پار تجارتی سرگرمیاں معطل: وزارت داخلہ کا آرڈر

سرینگر/مرکزی وزارت داخلہ نے جمعرات کو ایک حکمنامہ جاری کرتے ہوئے کنٹرول لائن کے آر پار تجارت کو معطل کردیا۔ کشمیر کے منقسم حصوں کے مابین کنٹرول لائن سے تجارتی سرگرمیوں کو معطل کرنے کا فیصلہ لیتے ہوئے مرکزی وزارت داخلہ نے کہا کہ اس کراس ایل او سی ٹریڈ کا''غلط استعمال'' کیا جارہا تھا۔ وزارت داخلہ کے آرڈر میں بتایا گیا ہے''حکومت ہندوستان کو اطلاعات موصول ہورہی تھیں کہ ایل او سی ٹریڈ کا پاکستانی عناصر کے ہاتھوں غلط استعمال ہورہا تھا اور اس کو ہتھیار، کرنسی اور نشیلی چیزیں یہاں بھیجنے کیلئے کام میں لایا جاتا تھا''۔ آرڈر میں مزید بتایا گیا ہے کہ این آئی اے کے ہاتھوں کئی کیسوں کی تحقیقات کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ کراس ایل او سی ٹریڈ کے ساتھ وابستہ افراد کا تعلق غیر قانونی تنظیموں کے ساتھ ہے جو علیحدگی پسندی کو بڑھاوا دے رہے ہیں۔ آرڈر کے مط

لوک سبھا پولنگ: تین بجے تک کٹھوعہ میں سب سے زیادہ 64.6فیصد ، سرینگر میں سب سے کم5.7فیصد ووٹنگ ریکارڈ

سرینگر/جموں کشمیر کی دو نشستوں پر جمعرات کو لوک سبھا کی دوسرے مرحلے کی ووٹنگ کے دوران تین بجے تک مجموعی طور پر38.5فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی تھی۔ اُدھمپور پارلیمانی نشست میں کٹھوعہ ضلع کے اندر اس مدت تک سب سے زیادہ یعنی64.4فیصد ووٹنگ ریکارڈ ہوئی تھی۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق سرینگر پارلیمانی نشست پرضلع بڈگام میں دن کے تین بجے تک 17.1فیصد ،ضلع گاندربل میں14.4فیصد جبکہ ضلع سرینگر میں5.7فیصدو وٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرینگر کی پارلیمانی نشست انہی تین اضلاع پر مشتمل ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع ریاسی میں تین بجے تک62.7فیصد،کٹھوعہ میں64.4فیصد،اُدھمپور میں63.1فیصد،رامبن میں50.8فیصد،ڈوڈہ میں57.2فیصد اور ضلع کشتوار میں50.4فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ اُدھمپور پارلیمانی نشست انہی چھ اضلاع پر مشتمل ہے۔ ووٹنگ آج صبح سات بجے شروع ہوئی جو شام چھ بجے تک جاری رہے گی۔  

چاڈورہ میں پولنگ مرکز کے نزدیک فورسز کے ساتھ جھڑپوں میں تین زخمی

سرینگر/ایک خاتون سمیت تین شہری جمعرات کو وسطی کشمیر کے چاڈورہ علاقے میں اُس وقت زخمی ہوگئے جب فورسز اور مظاہرین کے درمیان ایک مقامی پولنگ مرکز کے نزدیک جھڑپیں ہوئیں۔ سرکاری ذرائع نے کہا کہ مظاہرین نے بڈگام ضلع کے ہفرو گائوں میں فورسز پر پتھرائو کیا جس کے جواب میں فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے پیلٹ فائر کئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ فورسز کی کارروائی میں ایک خاتون سمیت تین شہری زخمی ہوگئے۔ زخمی خاتون کو علاج کیلئے سرینگر منتقل کیا گیا جبکہ باقی ماندہ دو زخمیوں کا علاج چاڈورہ اسپتال میں جاری تھا۔ سرینگر۔بڈگام پارلیمانی نشست پر لوک سبھا انتخابات کے دوسرے مرحلے میں ووٹنگ جاری ہے۔  

لوک سبھا پولنگ: ریاست میں ایک بجے تک30فیصد ووٹنگ درج

سرینگر/جموں کشمیر کی دو نشستوں پر جمعرات کو لوک سبھا کی دوسرے مرحلے کی ووٹنگ کے دوران د ن کے ایک بجے تک مجموعی طور پر29.6فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع بڈگام میں ایک بجے تک 11.4فیصد ،ضلع گاندربل میں11.0فیصد جبکہ ضلع سرینگر میں4.8فیصدو وٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرینگر کی پارلیمانی نشست انہی تین اضلاع پر مشتمل ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع ریاسی میں ایک بجے تک49.2فیصد،کٹھوعہ میں49.7فیصد،اُدھمپور میں48.7فیصد،رامبن میں39.3فیصد،ڈوڈہ میں43.2فیصد اور ضلع کشتوار میں39.3فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ اُدھمپور پارلیمانی نشست انہی چھ اضلاع پر مشتمل ہے۔ ووٹنگ آج صبح سات بجے شروع ہوئی جو شام چھ بجے تک جاری رہے گی۔  

لوک سبھا پولنگ: ریاست میں11بجے تک17فیصد سے زیادہ ووٹنگ ریکارڈ

سرینگر/جموں کشمیر کی دو نشستوں پر جمعرات کو لوک سبھا کی دوسرے مرحلے کی ووٹنگ کے دوران صبح گیارہ بجے تک مجموعی طور پر17.8فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع بڈگام میں گیارہ بجے تک 6.4فیصد ،ضلع گاندربل میں6.5فیصد جبکہ ضلع سرینگر میں2.3فیصدو وٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرینگر کی پارلیمانی نشست انہی تین اضلاع پر مشتمل ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع ریاسی میں گیارہ بجے تک28.8فیصد،کٹھوعہ میں28.5فیصد،اُدھمپور میں28.7فیصد،رامبن میں19.5فیصد،ڈوڈہ میں28.6فیصد اور ضلع کشتوار میں23.6فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ اُدھمپور پارلیمانی نشست انہی چھ اضلاع پر مشتمل ہے۔ ووٹنگ آج صبح سات بجے شروع ہوئی جو شام چھ بجے تک جاری رہے گی۔  

لوک سبھا پولنگ: ریاست میں پہلے چار گھنٹوں کے دوران6فیصد ووٹنگ ، سرینگر میں1.23فیصد ریکارڈ

سرینگر/جمعرات کو صبح نو بجے تک جموں کشمیر کی دو نشستوں پر مجموعی طور پر6.1فیصد ووٹران نے اپنی رائے کا اظہار کیا تھا ۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق سرینگر کی پارلیمانی نشست پر محض1.23فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی تھی جبکہ اُدھمپور میں 8.6فیصد ووٹنگ درج کی گئی تھی۔ حکام کے مطابق تا ہم ووٹنگ کا سلسلہ سرینگر اور اُدھمپور حلقوں کے اندر پُر امن طریقے سے جاری  تھا۔  

کشمیر میں پولنگ والے علاقوں میں ہڑتال، انٹرنیٹ سروس معطل

سرینگر/سرینگر پارلیمانی حلقے میں آنے والے تین اضلاع، سرینگر، بڈگام اور گاندربل میں جمعرات کو ہڑتال کی جارہی ہے۔ ریاست کے سرینگر اور اُدھمپور پارلیمانی حلقوں میں آج لوک سبھا کیلئے دوسرے مرحلے کی پولنگ جاری ہے ۔ ہڑتال کی اپیل علیحدگی پسندوں نے کر رکھی تھی۔ ادھر حکام نے پولنگ والے علاقوں میں موبائیل انٹرنیٹ سروس معطل کر رکھی ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق یہ اقدام ''امن و قانون کی صورتحال'' بنائے رکھنے کیلئے اُٹھایا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سرینگر، بڈگام اور گاندربل اضلاع میں تمام دکان اور کاروباری ادارے بند ہیں جبکہ سڑکیں بھی سنسان نظر آرہی ہیں۔