مقبول بٹ کی35ویں برسی پروادی کشمیر میں ہڑتال

سرینگر/جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے بانی محمد مقبول بٹ کی35ویں برسی پر سوموار کو وادی کشمیر میں مکمل ہڑتال رہی۔ وادی کے اطراف و اکناف میں دکان اور کاروباری ادارے بند رہے جبکہ پبلک ٹرانسورٹ بھی سڑکوں سے غائب ہے تاہم پرائیویٹ گاڑیوں کی آوا جاہی جاری رہی۔  ذرائع کے مطابق سرکاری دفاتر میں ملازمین کی حاضری بھی متاثر رہی ۔ ضلع کپوارہ کے ترہگام نامی گائوں کے رہنے والے، مقبول بٹ کو دلی کی تہار جیل میں آج ہی کے دن1984میں تختہ دار پر لٹکایا گیا۔ اُنہیں بعد میں جیل احاطے میں ہی دفن کیا گیا۔ آج کے ہڑتال کی اپیل سید علی گیلانی، میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل علیحدگی پسندوں کے وفاق مشترکہ مزاحمتی قیادت نے کی تھی۔ مذکورہ وفاق کا مطالبہ ہے کہ مرحوم کی باقیات اُن کے گھروالوں کو سونپ دی جائیں۔  

کیلم کولگام میں گھمسان کا رن، 5حزب جنگجو جان بحق

سرینگر//جنوبی ضلع کولگام کے کیلم علاقے میں جنگجوئوں اور سرکاری فورسز کے درمیان گھمسان کی جھڑپ میں ایک پی ایچ ڈی اسکالر سمیت5جنگجو جان بحق ہوئے،جبکہ تصادم کی جگہفورسز اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں میں 11 شہری زخمی ہوئے۔ اس دوران بانہال۔ بارہمولہ ریل سروس کو دوسرے روز بھی معطل رکھا گیا، جبکہ کولگام میں انٹرنیٹ سروس کو منقطع کیا گیا۔اس دوران کولگام میں دوسرے روز بھی مسلسل مکمل ہڑتال سے عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی۔ جھڑپ  کولگام کے کیلم میر پورہ علاقے میں اتوار کی صبح اس وقت لوگوں میں سخت خوف و ہراس پھیل گیا،جب علاقے میں  موجود جنگجوئوں اور فورسز کے درمیان گولیوں کا تبادلہ شروع ہوا۔ مقامی لوگوں کے مطابق فوج کی 9 آرآر، کولگام ٹاسک فورس اور 18 بٹالین سی آر پی ایف نے کیلم کو دوران شب ہی محاصرہ میں لیا تھا اور صبح کے وقت ہی نماز فجر سے قبل محاصرے کو مزید سخت کیا گیا۔ذرائع کا

لالچوک میں گرنیڈ دھماکہ، 7اہلکاروںاور 2خواتین سمیت11افراد زخمی

سرینگر// شہر کے مصروف ترین علاقے لالچوک میں قائم پلیڈئم کیمپ پر اتوارسہ پہر مشتبہ جنگجوئوں کی طرف سے داغے گئے گرینیڈ دھماکے میں7اہلکاروں اور 4شہریوں سمیت11افراد زخمی ہوئے۔ شہر کے لالچوک علاقے میں اتوار کو اس وقت خوف و ہراس پھیل گیا جب مصروف ترین بازار میں پلیڈئم سنیما میں قائم سی آر پی ایف کے132ویں بٹالین کے کیمپ پر نامعلوم اسلحہ برداروں نے اتوار شام7بجکر10منٹ کے قریب دستی بم ستے حملہ کیا۔عینی شاہدین کے مطابق دستی بم زور دار دھماکے سے پھٹ گیا،جس کے نتیجے میں لالچوک میں افراتفری مچ گئی اور لوگ محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے۔عینی شاہدین کے مطابق اتوار ہونے کی وجہ سے شہر میںکافی لوگ موجود تھے جو خریداری کرنے میں مشغول تھے،تاہم اچانک دھماکی کی وجہ سے وہاں بھگدڈ مچ گئی،اور کچھ دیر کیلئے لوگوں کو سمجھ میں ہی نہیں آیا کہ دھماکہ کہا ںہوا۔سی آر پی ایف کے ترجمان سنجے شرما نے کشمیر عظمیٰ کو بت

بجلی کا نظام ِ ترسیل و تقسیم ، اربوں روپے کی مرکزی سکیمیں یکسر ناکام

سرینگر //بجلی کی ترسیل وتقسیم نظام میں معقولیت لانے اور بنیادی ڈھانچے کو استوار کرنے کیلئے مرکزی حکومت کی متعدد اسکیموں کے تحت کروڑوں روپے صرف کئے جانے کے باوجود ریاست جموں وکشمیر خصوصا وادی کا بجلی نظام زبوں حالی کا شکار ہے۔حالیہ شدید برفباری کے دوران بجلی کے بنیادی ڈھانچے کی صورتحال بے نقاب ہوگئی اور انتظامیہ کے بڑے بڑے دعوے جھوٹ کا پلندہ ثابت ہوئے ۔ سوبھاگیہ سکیم سے لیکر آر اے پی ڈی آر پی کے علاوہ دین دیال اور پرائم منسٹر ڈیولپمنٹ سکیموں کے تحت وادی کے بوسیدہ بجلی ترسیلی نظام کو بدلنے کیلئے کروڑوں روپے خرچ کرنے کے باوجود بھی معمولی برف باری نے اس سارے نظام کی ہوا نکال دی ہے ۔معلوم رہے کہ پچھلے سال سرکار نے گھر گھر بجلی پہنچانے کی غرض سے سوبھگیا نامی شروع کی، اس کی ڈیڈ لائن دسمبر2018مقرر کی گئی تھی اس سکیم کے تحت کشمیراور لداخ کے 12اضلاع میں 109338 گھرانوں کو بجلی فراہم کرنے کی غرض

جموں ۔سرینگر شاہراہ 5ویں روز بھی بند

بانہال // حالیہ برفباری اور بارشوں کی زد میں آکر کئی مقامات پر تباہ ہوئی جموں سرینگر شاہراہ پر اگرچہ کام جاری ہے تاہم جگہ جگہ نئی پسیاں گرآنے سے سڑک کی مرمت و تجدید کے کام میں رکاوٹیں آرہی ہیں۔محکمہ ٹریفک اور بیکن کا کہنا ہے کہ شاہراہ کی بحالی کیلئے مزید وقت درکار ہے ۔اتوار بعد دوپہر تین بجے کے قریب رام بن کے ماروگ علاقے میں جموں سرینگر شاہراہ تازہ پسیوں کی وجہ سے ٹریفک کیلئے پانچویں روز بھی بند رہی اور شاہراہ کی بحالی کے امکانات پیر کی شام تک بھی ممکن دکھائی نہیں دے رہے ہیں۔ ماروگ کی بھاری پسی کے گر انے سے چند منٹ پہلے شان پیلس رام بن سے دو سو کے قریب چھوڑی گئی درماندہ مسافر گاڑیوں پر مشتمل ٹریفک ابھی اس پسی سے ایک سے دو کلومیٹر کی دوری پر ہی واقع تھا کہ ماروگ کے مقام بڑی پہاڑی بھاری ملبے کے ساتھ شاہراہ پر گر ائی اور ایک بڑا حادثہ ٹل گیا۔ ماروگ کے مقام پرگر ائی اس پسی نے سڑک کے کم

۔11فروری: مقبول بٹ کی برسی: ترہگام میں مشعل بردار جلوس برآمد

کپوارہ//لبریشن فرنٹ کے بانی مرحوم مقبول بٹ کے گھر میں اتوار کی شام سے ان کی برسی پر تیاریو ں کا سلسلہ جاری ہے اور آج پیر کو ان کے گھر میں ایک خصوصی تعزیتی تقریب کا اہتمام کیا جارہا ہے جس کے دوران مکمل ہڑتال ہوگی اور مزار شہداء پر حاضری دی جائے گی ۔مرحوم مقبول بٹ کی ہمشیرہ محمودہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ ظہور احمد بٹ کی گرفتاری اور جیل میں ان کے حوصلہ پست نہیں ہیں بلکہ میرے بڑے بھائی محمد مقبول بٹ کی برسی پر جلسہ جلوس کا مکمل انتظام ہے تاکہ دنیا کہ پتہ چل سکے کہ مقبول بٹ کی تہاڑ جیل میں پھانسی دینے کے بعد ان کے خاندان کے حوصلے بلند ہیں اور وہ آ زادی سے دستبردار نہیں ہونگے ۔انہوں نے کہا کہ جب تک کشمیر ی قوم کو آ زادی نصیب ہوگی وہ مرحوم محمد مقبول بٹ کے مشن کو ہر حال میں جاری رکھیں گے اور اس کیلئے وہ کوئی بھی قربانی دینے کیلئے تیار ہیں ۔ان کا مزید کہنا ہے کہ میرے 4بھائیو ں نے آ زاد

مغل شاہراہ اور سادھنا ٹاپ پرٹنلوں کی تعمیرکھٹائی میں

سرینگر // مغل روڑ اور سادھنا پر ٹنلوں کی تعمیر کا معاملہ ابھی بھی کھٹائی میں پڑا ہوا ہے ریاستی سرکار نے اگرچہ دونوں ٹنلوں کے حوالے سے ایک مفصل پروجیکٹ رپورٹ تیار کر کے مرکزی سرکار کو ارسال کی ہے لیکن مرکزی سرکارکی جانب سے تاحال اُن پروجیکٹوں کو منظوری نہیں ملی پائی ہے ۔کشمیر اور جموں خطوں کے بیچ سرما کے دوران متبادل کے طور کام آنے والی شاہراہ مغل روڑ پورا سال کھلا رکھنے میں جہاں سرکاریں ناکام ہو چکی ہیں وہیں اس 230سالہ پرانی تاریخی مغل پردوبجن شوپیان اور بفلیازکے درمیان تعمیر ہونے والی ٹنل کیلئے بنائی گئی مفصل پروجیکٹ رپورٹ پر بھی مرکزی سرکار کوئی دھیان نہیں دے رہی ہے ۔یہی نہیں بلکہ سادھنا ٹنل کی تعمیر کا معاملہ بھی ہنوز کھٹائی میں پڑا ہوا ہے ۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ 2 سال قبل سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے دلی میں وزیر ٹرانسپورٹ نتن گڈکری سے ملاقات کر کے یہ مطالبہ کیا تھاکہ مغل روڑ اور

۔13اور14فروری پھربرفباری متوقع

سرینگر //محکمہ موسمیات نے 13 اور 14 فروری کے دوران ایک  بار پھر برفباری اور بارشوں کا امکان ظاہر کیا ہے ۔پچھلے تین روز سے وادی کے لوگوں کو جہاں دن کے دوران دھوپ سے راحت ملی وہیں شبانہ سردیوں کا زور بھی برابر دیکھا گیا ۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ اگلے 24گھنٹوں کے ددوران وادی میں موسم خشک رہے گا اور اس بیچ کم سے کم درجہ حرارت میں معمولی گراوٹ بھی آئے گی ۔محکمہ کے ڈپٹی ڈائریکٹر مختار احمد نے کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ12اور 13فروری کی درمیانی رات کو ایک بار پھر مغربی ہوائیں وادی پر اثر انداز ہوں گی جس کے بعد 13اور14فروری کو بالائی علاقوں میں بھاری اور میدانی علاقوں میں ہلکے سے درمیانہ درجہ کی بارشیں ہوںگی ۔ ادھر تین روز سے موسم میں آئی خوشگوار تبدیلی کے بیچ کم سے کم درجہ حرارت میں کمی دیکھی گئی ہے ۔محکمہ موسمیات کے ترجمان کے مطابق سرینگر میں سنیچر اور اتوار کی درمیانی رات

۔11فروری: مقبول بٹ کی برسی: ترہگام میں مشعل بردار جلوس برآمد

کپوارہ//لبریشن فرنٹ کے بانی مرحوم مقبول بٹ کے گھر میں اتوار کی شام سے ان کی برسی پر تیاریو ں کا سلسلہ جاری ہے اور آج پیر کو ان کے گھر میں ایک خصوصی تعزیتی تقریب کا اہتمام کیا جارہا ہے جس کے دوران مکمل ہڑتال ہوگی اور مزار شہداء پر حاضری دی جائے گی ۔مرحوم مقبول بٹ کی ہمشیرہ محمودہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ ظہور احمد بٹ کی گرفتاری اور جیل میں ان کے حوصلہ پست نہیں ہیں بلکہ میرے بڑے بھائی محمد مقبول بٹ کی برسی پر جلسہ جلوس کا مکمل انتظام ہے تاکہ دنیا کہ پتہ چل سکے کہ مقبول بٹ کی تہاڑ جیل میں پھانسی دینے کے بعد ان کے خاندان کے حوصلے بلند ہیں اور وہ آ زادی سے دستبردار نہیں ہونگے ۔انہوں نے کہا کہ جب تک کشمیر ی قوم کو آ زادی نصیب ہوگی وہ مرحوم محمد مقبول بٹ کے مشن کو ہر حال میں جاری رکھیں گے اور اس کیلئے وہ کوئی بھی قربانی دینے کیلئے تیار ہیں ۔ان کا مزید کہنا ہے کہ میرے 4بھائیو ں نے آ زاد

۔186مسافرجموں سے سرینگر ایئرلفٹ

جموں//اتوار کو انڈین ایئرفورس نے 180 درماندہ کشمیری مسافروں کو جموں سے بذریعہ ہوائی جہاز سرینگر پہنچایا۔یہ مسافر پچھلے کئی دنوں سے جموں میں درماندہ تھے ۔دفاعی ترجمان کے مطابق ایئرفورس نے جموںوکشمیر حکومت کی درخواست پرسی ۔17گلوب ماسٹر کا خصوصی طیارہ چلاکر درماندہ مسافروں کو سرینگر منتقل کیا۔انہوںنے بتایاکہ جموں سرینگر شاہراہ کے بند رہنے کی وجہ سے جموں میں درماندہ افراد کی مدد کیلئے خصوصی ہیلی کاپٹر کا اہتمام کیاگیا۔اس دوران سرینگر منتقل کئے گئے مسافروں میں مزدور، خواتین اور بچے بھی شامل تھے جنہوں نے کئی راتیں بس اڈہ اور دیگر مقامات پر بغیر سوئے ہوئے گزار دیں ۔ڈپٹی کمشنر جموں رمیش کمار نے بتایاکہ 186درماندہ مسافروں کو سرینگر پہنچایاگیاہے جن میں پانچ سال سے کم عمر 16بچے بھی شامل ہیں ۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ بھاری برفباری اور پسیاں گرآنے کی وجہ سے جموں سرینگر شاہراہ پر ٹریفک مسلسل بند ہے جس

لداخ صوبے کیلئے ہیڈ کوارٹر کا قضیہ، کرگل میں ایجی ٹیشن شروع

جموں//لداخ خطے کو صوبہ قرار دئے جانے کے بعد اعلی انتظامی ڈھانچہ لیہہ میں قائم کرنے کا معاملہ کرگل کے عوام نے مسترد کرتے ہوئے ایجی ٹیشن کی راہ اپنالی ہے ۔اتوار کو کرگل میں دوبااثر دینی جماعتوں اسلامک سکول اور خمینی میموریل ٹرسٹ کے بینر تلے نکالے گئے ایک احتجاجی جلوس میں کثیر آبادی نے شرکت کی اور صوبائی کمشنر اور آئی جی پی پیڈ کوارٹر کو باری باری بنیادوں پر دونوں اضلاع میں قائم کرنے کا مطالبہ کیا۔یہ احتجاجی جلوس پر امن پور ڈپٹی کمشنر کرگل کو میمورنڈم پیش کرنے کے بعد اختتام پذیر ہوا۔کرگل کے عوام کا مطالبہ ہے کہ صوبائی کمشنر اور آئی جی پی کے ہیڈ کوارٹر گرمیوں میں کرگل اور سردیوں کے دوران لیہہ میں قائم کئے جائیں تاکہ دونوں اضلاع کے عوام صوبائی درجے کیلئے قائم کئے جارہے بنیادی ڈھانچے سے مستفید ہوں۔ذرائع کے مطابق احتجاجی جلوس میں سیاسی،مذہبی ،اور سماجی نمائندوں نے شرکت کی جو اسلامیہ سکول چ

ریلائنس ہیلتھ انشورنس تنخواہوں سے کتنی رقم کاٹی گئی؟

رینگر//ریلائنس انشورنس سکیم کے حوالے سے جعلسازی کی تفصیلات کوکو عوام کے سامنے لانے کا مطالبہ کرتے ہوئے پیوپلز ڈیموکریٹک پارٹی نے ریاستی گورنر ستیہ پال ملک پر زور دیا ہے کہ وہ اس سیکنڈل کی تفصیلات سامنے لائیں کیونکہ گورنر نے ازخود اس انشورنس سکیم کو فراڈ اور جعلسازی سے بھرپور قرار دیا تھا ۔پی ڈی پی کے سینئر لیڈر نعیم اختر نے گورنر سے مطالبہ کہ کہ ریلائنس انشورنس سکیم کی عمل درآمد میں ملوث افسران کیخلاف کاروائی ہوئی تو اسے بھی سامنے لایا جائے ۔نعیم اختر نے کہاکہ جعلسازی اور فراڈ سے بھرپور ریلائنس انشورنس ہیلتھ سکیم کو محض بند کرنے سے کام نہیں چلے گا بلکہ اس کی دقیق تحقیقات کرکے اس میں ملوث افسران کیخلاف کاروائی ناگزیر ہے ۔نعیم اختر نے گورنر سے سوال کیا کہ کیا ایسا عمل جو کہ جعلسازی سے بھرپور ہو ،کو محض ختم کرنا کافی ہے ۔کیا اس فراڈ میں ملوث افراد کیخلاف کاروائی نہیں ہونی چاہئے ،۔انہوں ن

تازہ ترین