تازہ ترین

کانگریس، ٹی آر ایس کے ہنگامہ کی وجہ سے لوک سبھا کی کارروائی میں خلل

نئی دہلی//کانگریس اور تلنگانہ راشٹر سمیتی (ٹی آر ایس) کے ارکان کے ہنگامہ کی وجہ سے آج لوک سبھا کی کارروائی تین بار ملتوی کرنی پڑی۔  کانگریس کے ملک ارجن کھڑگے نے وقفہ صفر کے دوران رافیل سودے کے معاملہ میں ہزاروں کروڑ کے گھپلے کا الزام لگاتے ہوئے پارلیمنٹ کی مشترکہ کمیٹی (جے پی سی) سے تحقیقات کرانے کا مطالبہ کیا۔ دریں اثنا، کانگریس کے ارکان اسپیکر کی نشست گاہ کے قریب پہنچ گئے اور نعرے لگانے لگے ۔ اراکین نے اپنے ہاتھوں میں تختیاں اٹھائے ہوئے تھے ، جن پر لکھا تھا 'پارلیمنٹ اور ملک کے عوام کو گمراہ کرنا بند کرو اور '' رافیل سودے کے کا جے پی سی سے تحقیقات کراؤ''۔ اس سے پہلے ، ٹی آر ایس کے جتندر ریڈی نے حکومت پر تلنگانہ کے ساتھ امتیاز برتنے کا الزام لگایا۔ ان کا الزام تھا کہ حکومت نئے سکریٹریٹ کے احاطے اور اداروں کے لئے زمین نہیں دے رہی ہے ۔ ان کے اس الزام کے بعد ٹی

ہری ونش راجیہ سبھا کے ڈپٹی چیئرمین منتخب

نئی دہلی//قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے ) کے امیدوار ہری ونش کو آج راجیہ سبھا کا ڈپٹی چیئرمین منتخب کر لیا گیا۔ ان کے حق میں 125 ووٹ پڑے جبکہ مخالفت میں 105 ارکان نے ووٹ دیا۔ مسٹر ہری ونش کے خلاف اپوزیشن نے کانگریس کے بی کے ہری پرساد کو اپنا امیدوار بنایا تھا۔ اپوزیشن کے کچھ رکن ووٹنگ کے دوران ایوان میں موجود نہیں تھے ۔راجیہ سبھا کی کارروائی شروع ہوتے ہی چیئرمین ایم ونکیا نائیڈو نے ضروری کاغذات میزپر رکھوانے کے فوراً بعد ڈپٹی چیئرمین کے انتخابات کی کارروائی شروع کی۔ انہوں نے بتایا کہ ڈپٹی چیئرمین کے انتخابات کے لئے نو نوٹس ملے اور متعلقہ ارکان سے اپنے اپنے امیدواروں کے حق میں تجویز پیش کرنے کو کہا۔ مسٹر ہری ونش کے حق میں چار اور مسٹر ہری پرساد کے حق میں پانچ تجویز پیش کئے گئے ۔سب سے پہلے جنتا دل یو کے رام چندر پرساد سنگھ نے مسٹر ہری ونش کے حق میں تجویز پیش کی اور ریپبلکن پارٹی (A) کے رک

راجیہ سبھا میں ارون جیٹلی کا استقبال

نئی دہلی//وزیر اورایوان بالا کے رہنما ارون جیٹلی نے گردہ کی پیوبند کاری کے بعد آج پہلی بار راجیہ سبھا کی کارروائی میں حصہ لیا۔وہ ایوان کے ڈپٹی چیئر مین کے انتخابات میں ووٹ کرنے ایوان میں پہنچے تھے ۔صبح میں ایوان کی کارروائی شروع ہونے پر مسٹر جیٹلی جیسے ہی ایوان میں داخل ہوئے برسراقتدار -حزب مخالف کے ممبران نے میزیں تھپتھپا کر ان کا استقبال کیا۔چیئر مین ایم ونکیا نائیڈو نے مسٹر جیٹلی کی صحت کے لحاظ سے ممبران کو صلاح دی کہ وہ ان کے پاس جاکر ان سے ہاتھ نہ ملائیں ۔انہوں نے کہا کہ ممبران کو انتہائی جوش میں آکر مسٹر جیٹلی سے ہاتھ نہیں ملانا چاہئے اور ان سے فاصلہ پر رہ کر بات کرنی چاہئے ۔ کیونکہ ڈاکٹروں نے انہیں انفیکشن سے بچنے کیلئے لوگوں سے دور رہنے کی صلاح دی ہے ۔اس کے بعد ایوان میں وزیر اعظم مودی نے جیٹلی سے ہاتھ ملانے کیلئے اپنا ہاتھ بڑھایا تو انہوں نے مسکراتے ہوئے ہاتھ بڑھانے کے بجائے د

موٹر گاڑی ترمیمی بل ریاستوں کے حقوق کی نفی نہیں

نئی دہلی//نقل وحمل اور قومی شاہراؤں کے مرکزی وزیر نتن گڈکری نے اپوزیشن جماعتوں سے سڑکوں پر محفوظ ٹریفک کو یقینی بنانے کے لئے راجیہ سبھا میں زیر التواء موٹرگاڑی ترمیمی بل 2017 کو منظور کیے جانے کی اپیل کرتے ہوئے آج یقین دہانی کرائی کہ بل میں ریاستوں کے حقوق کو سلب کرنے کا مرکز کا کوئی ارادہ نہیں ہے ۔ مسٹر گڈکری نے لوک سبھا میں وقفہ سوال کے دوران گاڑیوں میں تھرڈپارٹي انشورنس سمیت کچھ سوالات کے جواب میں کہا کہ ملک میں ہر سال تقریبا پانچ لاکھ سڑک حادثات ہوتے ہیں جن ڈیڑھ لاکھ لوگوں کی موت ہوجاتی ہے ۔ اس کے لئے حکومت نے موٹر گاڑی ایکٹ میں ترمیم کی ہے اور رقم 50 ہزار روپے سے بڑھا کر پانچ لاکھ روپے اور ہٹ اینڈ رن کے معاملے میں 25 ہزار روپے سے بڑھا کر دو لاکھ روپے کئے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ، وہ ہائی ویز پر سیاہ مقامات (بلیک اسپاٹ) اور پاٹ ہولس کی شناخت کرکے انہیں درست کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔&nbs

باصلاحیت استاد ایک اثاثہ : رینو بترا

حیدرآباد، //اساتذہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ عصری تعلیمی مہارتوں سے خود کو لیس رکھیں، کیونکہ ایک باصلاحیت استاد نہ صرف طلبہ بلکہ اپنے ادارے کے لیے بھی ایک اثاثہ ہوتا ہے۔ ڈاکٹر رینو بترا، ایڈیشنل سکریٹری، یونیورسٹی گرانٹس کمیشن ،نئی دہلی نے 36 ویں اورینٹیشن کورس کے اختتامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اس خیال کا اظہار کیا۔ مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے یو جی سی مرکز برائے فروغ انسانی وسائل (یو جی سی ایچ آر ڈی سی) نے اس اورینٹیشن پروگرام کا اہتمام کیا تھا۔ ایک مہینہ طویل اورینٹیشن کورس میں تلنگانہ، آندھرا پردیش، کرناٹک، مہاراشٹر، کیرالا، تمل ناڈو، مغربی بنگال اور ملک کی دیگر ریاستوں سے 59 افراد نے شرکت کی۔ مرکز کی جانب سے کامرس اور مینجمنٹ مضامین کے اساتذہ کے لیے ریفریشر کورس کا اختتامی اجلاس بھی منعقد کیا گیا۔ پروفیسر وینو گوپال ریڈی، صدر نشین، آندھرا پردیش اسٹیٹ کمیشن آف ہایئر ایجوکی