تازہ ترین

۔1000کروڑ روپے زائدالمعیاد ہونے کاخدشہ واجبات میں منتقل کرنے کاٹھیکیداروں کامشورہ

26 مارچ 2020 (00 : 12 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
 سرینگر//تعمیراتی ٹھیکیداروں کا کہنا ہے کہ پلان کے تحت جو رقومات ترقیاتی سرگرمیوں کیلئے مختص رکھے گئے تھے، ان کا تصرف عمل میں نہیں لایا گیا،جس کے نتیجے میں مالی سال کے اختتام کے ساتھ ہی یہ رقومات لیپس ہوںگی۔ سینٹرل کنٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی نے سرکار کو مشورہ دیا ہے کہ سال2014سے حکومت کو قریب1000کروڑ روپے کے واجبات ہیںاور سرکار یہ رقومات ان واجبات کی ادائیگی کے مد میں ہی خرچ کریں تاکہ سرکاری خزانے پر بھی بوجھ کم ہواور ٹھیکیداروں کی رقومات جو گزشتہ5برسوں سے واجب الادا ہیں ، واگزار ہو۔سینٹرل کانٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی کے جنرل سیکریٹری فاروق احمد ڈار کا کہنا ہے کہ کرئونا وائرس کے نتیجے میں ٹھیکیدار بھی گھروں میں اسیر ہوکر رہ گئے ہیں اور انکی مالی حالت بہت خراب ہیںجبکہ تعمیراتی ٹھیکیداروں سے جڑی زنجیر کا بھی یہی حال ہیں کیونکہ انہیں امید تھی کہ مالی سال کے اختتام کے ساتھ ہی انکی رقومات بھی واگزار ہونگی اور واجبات کی ادائیگی بھی ہوگی،تاہم اب ایسے کوئی صورتحال نظر نہیں آرہی ہے۔ ڈار نے سرکار کو مشورہ دیا کہ بہتر ہے کہ سرکاری خزانے پر بوجھ کم کرنے کیلئے ان رقومات کو واجبات میں منتقل کریں ،جو ترقیاتی کاموں کیلئے تھی،تاہم نامساعد حالات کی وجہ سے ان کا تصرف نہیں ہوا۔