تازہ ترین

پابندی سے مستثنیٰ ضروری خدمات کی دکانیں بھی بند

لوگ ضروریات زندگی کیلئے پریشان، اوقات کار طے کیا جارہا ہے: انتظامیہ

26 مارچ 2020 (00 : 12 AM)   
(      )

محمد تسکین
بانہال// بانہال سمیت رام بن ضلع کے تقریباً تمام قصبوں میں مکمل لاک ڈاؤن کا نفاذ بدھ کے روز دوسرے دن بھی سختی سے جاری رہا تاہم 21 روز تک لاک ڈاؤن کو بڑھانے کے بعد ضروری سروسز کیلئے نامزد دکانیں بدھ کے روز بھی بند رہیں اور پولیس نے لوگوں اور دکانداروں کو مارکیٹ میں داخل نہیں ہونے دیا اور سختی سے عملدرآمد کیا گیا۔ اس صورتحال سے عام لوگوں کو ضروری چیزوں کے حصول میں سخت دشواری رہی۔ ایس ڈی ایم بانہال ظہیر عباس نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اس کیلئے طریقہ کار اور اوقات وضع کئے جارہے ہیں اور رجسٹرڈ دکانداروں کو پاس دیئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کہ بدھ شام تک اوقات کام وضع کرنے جمعرات کو لاک ڈاؤن کے دوران مستثنیٰ سروس گروسری، فوڈ آئٹمز ، ملک پروڈکٹ سبزی پھل وغیرہ کو بڑی احتیاط کا دھیان رکھتے ہوئے میسر رکھا جائے گا۔ انہوں نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ بلاوجہ بازاروں،قصبوں اور ہسپتالوں کا رخ نہ کریں اور بچوں وغیرہ کو دکانوں، مارکیٹوں اور ہسپتالوں میں اپنے ساتھ نہ کوئی اور نہ ہی بزرگوں کو باہر آنے دیں کیونکہ بچاؤ کیلئے گھروں میں رہنا ہی واحد حل ہے اور انتظامیہ آپکی مشکلات کا خیال رکھے گی ۔ انہوں نے کہا کہ سب ڈویژن بانہال میں ضروری سہولیات سے وابستہ محکموں کو متحرک رکھا گیا ہے اور عوام اور تاجر برادری کے تعاون سے سب کچھ بہتر طریقے سے بغیر کسی خلاف ورزی کے آگے بڑھ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دکانداروں سے ملاقات کے بعد کچھ سروسز بشمول LPG کو قصبہ سے گھر یا گاؤں میں ڈیلیور کرنے پر غور کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ میں اور میری انتظامیہ ہر وقت لوگوں کیلئے تیار بہ تیار ہے اور کسی بھی ایمرجنسی یا دشواری کی صورتمیں انہیں یا تحصیلدار اور متعین کئے گئے سٹاف ، پولیس اور محکمہ صحت سے رابط کرکے مدد لی جاسکتی ہے۔