تازہ ترین

محکمہ مچھلی پالن میں سکیموں کو جاری رکھنے پر تبادلہ خیال

20 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

جموں//بھیڑ و پشو پالن اور ماہی پروری محکمہ کے پرنسپل سیکرٹری نوین چودھری نے آج ایک اعلیٰ سطح کی میٹنگ میں محکمہ کے کام کاج کا جائزہ لیا۔میٹنگ میں آر اے ایس ٹیکنالوجی قائم کرنے ، ماہی پروری کے سیکٹر میں عملائی جارہی سکیموں کو جاری رکھنے اور دیگر معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ پچھلی تین دہائیوں کے دوران ہچریز ، فش فارموں ، فش ریرینگ یونٹوں اور لیبارٹریوں کی صورت میں پائیدار ڈھانچہ قائم کیا گیا ہے جبکہ باغِ بہو میں ایک بڑا ایکوریم بھی قائم کیا گیا ہے۔ڈائریکٹر فشریز جے اینڈ کے ایم اے میر نے پرنسپل سیکرٹری کو جموںوکشمیر میں مچھلی کی پیداوار میں اضافہ کرنے اور محکمہ اقتصادی حالت کو مزید بہتر بنانے کے لئے اٹھائے جارہے اقدامات کے بارے میں جانکاری دی۔اُنہو ں نے کہا کہ جموںوکشمیر ٹراوٹ مچھلیوں کے بیج پیدا کرنے میں خود کفیل ہے اور شمال مشرقی ریاستوں کی مانگ بھی پورا کی جاتی ہے۔اُنہوں نے کہا کہ ماہی پروری شعبے کو فروغ دینے کے لئے مرکزی سرکار کی مختلف سکیمیں عملائی جارہی ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ اب تک پرائیویٹ سیکٹر میں 1075 کارپ مچھلی اور 544 ٹراوٹ مچھلیوں کے یونٹ قائم کئے گئے ہیں۔پرنسپل سیکرٹری نے متعلقہ افسران کو فشریز محکمہ میں مقررہ کئے گئے اہداف کو حاصل کرنے کے لئے قریبی تال میل بنائے رکھنے کی ہدایت دی تاکہ مچھلیوں کے کاروں سے وابستہ افراد کی آمدن میں اضافہ کیا جاسکے۔اُنہوں نے تمام کسانوں کو کے سی سی سکیم کے دائرے میں لانے کی ہدایت دی ۔پرنسپل سیکرٹری نے مختلف سکیموں سے مستفید ہونے والے کسانوںکی تفصیلات او رفہرست اَپ لوڈ کرنے کی ہدایت دی  تاکہ اہل او رمستحق فارمروں کی مکمل نشاندہی کی جاسکیں۔