جے کے بنک 2018-19 کے مالی نتائج کا اعلان، 465کروڑ کا خالص منافع درج کیا

کاروبار 1لاکھ ساٹھ ہزار کروڑ روپے سے متجاوز

16 مئی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
 سرینگر//ریاست کے سب سے بڑے مالی ادارے اور ریاستی معیشت کی شہہ رگ کہلائے جانے والے جموں و کشمیر بینک نے آج گزشتہ مالی برس یعنی 2018-19  کے سالانہ مالی نتائج کا اعلان کیا ۔ ان مالی نتائج میں بینک نے اپنے خالص منافع میں پچھلے مالی برس کے مقابلے 129فی صد کا اضافہ درج کر کے اسے 465کروڑ روپے تک پہنچایا ہے ۔ ان سالانہ مالی نتائج کا جائزہ اور انکی منظوری آج بینک کے  بورڈ آف ڈائریکٹرس نے کارپوریٹ آفس میں منعقد ایک خصوصی میٹنگ میں دی ۔ مالی برس 2018  کے مارچ کوارٹر میں بینک نے28.41کروڑ کا  خالص منافع درج کیا تھا جبکہ 2019کے مارچ کوارٹر میں یہ منافع 214.79کروڑ روپے درج کیا گیا۔ بینک نے پرچون کریڈٹ میں ایک اچھی خاصی بڑھت درج کی ہے ، پی این بی میٹ لائف میںملوث حصص کی فروختگی اور کچھ بڑے غیر منافع بخش اثاثوں کی کامیاب تصفیہ طلبی سے بینک کی مجموعی آمدن 8487کروڑ تک پہنچ گئی ہے جو کہ ایک سال پہلے7116کروڑ روپے تھی۔ ریاست جموں و کشمیر میں گزشتہ سال کے مقابلے میں اس برس قرضوں میں 23 فی صد کی بڑھت حاصل ہے اور خالص سود آمدن میں بینک نے پچھلے مارچ کوارٹر کے مقابلے میں 42فی صد اضافہ درج کیا ہے۔  منافع کی کنجی سمجھی جارہی عمل NIIM سال کے چوتھے کوارٹر میں4.05 ہے جس میں3.84فی صد کا اضافہ موجود ہے۔ مالی برس  2018-19  کے نتائج پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے جے کے بینک چیئرمین اور سر پرست اعلیٰ  پرویز احمد نے ان نتائج کو  بورڈ آف ڈائریکٹرس کے بہتر تعاون اور رہنمائی کا نتیجہ قرار دیا جس وجہ سے بینک سے وابستہ ہر عملے کی محنت رنگ لائی ہے اور بینک کے خیر خواہوں اور کسٹمروں کا اعتماد  بلند سے بلند تر ہوتا رہا ہے۔ چیئرمین نے کہا کہ تناؤ بھرے ماحول کے باوجود جو کام بینک میں اعلیٰ انتظامیہ سے لیکر زمینی سطح پر برانچوں میں موجود سٹاف نے کیا ہے وہ قابل تحسین ہے۔بینک کے سرپرست نے کہا کہ جو اعداد و شمار اس مرتبہ سامنے آرہے ہیں وہ ہمارے کاروباری منصوبے کے تحت ہیں جس میں ہماری مخصوص توجہ ریاست جموں و کشمیر کے تینوں خطوں کی طرف ہے جہاں ہم بلا خلل قرضوں کا پھیلاؤ چاہتے ہیں
 

تازہ ترین