تازہ ترین

چند انچ برف نے انتظامیہ کے تمام دعوئوں کی پول کھول دی

برفباری سے پیدا شدہ صورتحال سے نمٹنے میں انتظامیہ کی ناکامی تشویشناک :کشمیر اکنامک الائنس

11 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیو ڈسک
سرینگر /وادی کشمیر میں بھاری برفباری سے پیدہ شدہ صورتحال سے نمٹنے میں انتظامیہ کی ناکامی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کشمیر اکنامک الائینس کے شریکِ چیرمین فاروق احمد ڈار نے کہا کہ برفباری شروع ہونے کے ساتھ ہی جس طرح سے انتظامیہ بے بس نظر آئی اْس سے صاف عیاں ہوا کہ انتظامیہ اس سے نمٹنے کیلئے مکمل طور پر تیار نہیں تھی اور وہ تمام دعوئے غلط ثابت ہوئے جن میں کہا گیا تھا کہ انتظامیہ کشمیر میں کسی بھی ناگہانی آفت سے نمٹنے کیلئے تیار ی کی حالت میں ہے ۔ پریس کانفرنس سے کشمیر اکناملک الائنس کے چیف ترجمان حاجی محمد صدیق رونگا نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ برفباری کے باعث سرینگر جموں شاہراہ کے مختلف مقامات پر سینکڑوں کی تعداد میں ٹرکیں پھنسی ہوئی ہے اور ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے جس کے باعث وہ فاقہ کشی پرف مجبور ہو رہے ہیں ،جبکہ جموں میں بھی ہزاروں کی تعداد میں کشمیری مسافر درماندہ ہے جس کا بھی کوئی پرحال ہیں ۔ سرینگر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرنے ہوئے کشمیر اکنامک الائنس کے شریک چیئرمین فاروق احمد ڈار نے کہا کہ وادی کشمیر میں ہوئی چند انچ برفباری نے انتظامیہ کے بلند بانگ دعوئوں کی قلعی کھول کر رکھ دی۔انہوں نے کہا کہ رابطہ سڑکوں اور گلی کوچوں کی بات تو دور کی ہے ابھی کلیدی سڑکوں پر برف ہٹائی نہیں گئی جو کہ انتظامیہ کیلئے ایک لمحہ فکریہ ہے ۔ ڈار نے کہا کہ انتظامیہ کی طرف سے بڑے بڑے دعوئے کئے جا رہے تھے جبکہ ضلعی سطحی پر تمام ضلع ترقیاتی کمشنر اس بات کا اعلان کرتے تھے کہ کسی بھی آفت سے نمٹنے کیلئے وہ بالکل تیار ہے تاہم کچھ ہی انچ برف جب ہوئی تو انتظامیہ نے لوگوں کو حالات کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا۔انہوں نے کہا کہ بات یہاں تک آ پہنچی کہ وادی کے کلیدی ہسپتالوں میں بھی لوگوں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑاجبکہ دور افتاد علاقوں میں لوگوں نے از خود مریضوں کو کندھوں پر بٹھا کر نزدیکی اسپتالوں تک پہنچایا ۔ فاروق ڈار نے کہاکہ گذشتہ 4سال سے مسلسل طور پر دعوے کئے جارہے ہیں لیکن حقیقت میں ان برسوں کے دوران لوگوں کو صرف مشکلات میںدھکیل دیا گیا۔انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ شہرسرینگر کے ساتھ ساتھ شمال و جنوب اور وسط کے علاقوں کے علاوہ خطہ چناب و پیرپنچال کے دور دراز اور پہاڑی علاقوں میں انتظامیہ اور حکومت کا کہیں نام و نشان نہیں، تمام چھوٹی بڑی سڑکیں بند پڑیں ہیں جس وجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے جبکہ لازمی خدمات کا کہیں نام و نشان نہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ بہت بڑی افسوس کی بات ہے کہ انتظامیہ ایک طرف سے لوگوں کو ہر طرف کی سہولیات بہم پہنچانے کے بڑے دعوئے کر رہے ہیں لیکن دوسرے طرف سے معمولی برفباری نے ان تمام دعوئوں کی پول کھول دیتی ہے۔ڈار نے ایس ایم سی محکمہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ محکمہ پہلے ہی سیاسی اکھاڑنے میں تبدیل ہوچکا ہے جس کا خمیازہ اب عام لوگوں کو بگھتنا پڑ رہا ہے۔ جو کہ باعث افسوس ہے ۔ پریس کانفرنس سے کشمیر اکناملک الائنس کے چیف ترجمان حاجی محمد صدیق رونگا نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ برفباری کے باعث سرینگر جموں شاہراہ کے مختلف مقامات پر سینکڑوں کی تعداد میں ٹرکیں پھنسی ہوئی ہے اور ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے جس کے باعث وہ فاقہ کشی پرف مجبور ہو رہے ہیں۔