تازہ ترین

لالچوک میں گرنیڈ دھماکہ، 7اہلکاروںاور 2خواتین سمیت11افراد زخمی

11 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(   عکاسی: حبیب نقاش    )

بلال فرقانی
سرینگر// شہر کے مصروف ترین علاقے لالچوک میں قائم پلیڈئم کیمپ پر اتوارسہ پہر مشتبہ جنگجوئوں کی طرف سے داغے گئے گرینیڈ دھماکے میں7اہلکاروں اور 4شہریوں سمیت11افراد زخمی ہوئے۔ شہر کے لالچوک علاقے میں اتوار کو اس وقت خوف و ہراس پھیل گیا جب مصروف ترین بازار میں پلیڈئم سنیما میں قائم سی آر پی ایف کے132ویں بٹالین کے کیمپ پر نامعلوم اسلحہ برداروں نے اتوار شام7بجکر10منٹ کے قریب دستی بم ستے حملہ کیا۔عینی شاہدین کے مطابق دستی بم زور دار دھماکے سے پھٹ گیا،جس کے نتیجے میں لالچوک میں افراتفری مچ گئی اور لوگ محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے۔عینی شاہدین کے مطابق اتوار ہونے کی وجہ سے شہر میںکافی لوگ موجود تھے جو خریداری کرنے میں مشغول تھے،تاہم اچانک دھماکی کی وجہ سے وہاں بھگدڈ مچ گئی،اور کچھ دیر کیلئے لوگوں کو سمجھ میں ہی نہیں آیا کہ دھماکہ کہا ںہوا۔سی آر پی ایف کے ترجمان سنجے شرما نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ دھماکے میں3سی آر پی ایف اہلکاروں،جن میں ایک اسسٹنٹ سب انسپکٹر بھی شامل ہیں کے علاوہ ایک خاتون زخمی ہوئے‘‘تاہم پولیس ذرائع کے مطابق اس حملے میں4 پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے،جبکہ3شہری جن میں 2خواتین بھی شامل ہیں بھی زخمی ہوئے جنہیں صدر اسپتال پہنچایا گیا۔پولیس ذرائع نے بتایا’’4پولیس اور3سی آر پی ایف اہلکاروں کے علاوہ3شہریوں سمیت10افراد زخمی ہوئے،اور تمام زخمیوں حالت ٹھیک ہیں۔‘‘ ذرائع کے مطابق زخمی پولیس اہلکاروں میں عاشق احمد،عابد احمد اور محمد شفیع کے علاوہ نصیر احمد بھی شامل ہیں،جبکہ سی آر پی ایف اہلکاروں میں اسسٹنٹ سب انسپکٹر منا سوامی،کانسٹبل وشال اور کانسٹبل دیوندر شامل ہیں جو سی آر پی ایف کی132بٹالین سے وابستہ ہیں۔ ذرئع کے مطابق زخمی خواتین میں حمیرہ اہلیہ سجاد احمد بابا ساکن ہارون،عبدالقیوم منڈی بل نوشہرہ اور طالبہ گلشن اہلیہ افتخار احمد ساکن ڈلگیٹ کے علاوہ شاداب احمد ساکن نشاط شامل ہیں۔پولیس افسر نے بتایا کہ تمام زخمیوں کی حالت ٹھیک ہے۔پورے علاقے کو محاصرے میں لیکر تلاشیوں کا سلسلہ شروع کیا گیا۔