تازہ ترین

بنی وادی میں بھاری برفباری سے معمولات زندگی متاثر

سڑک رابطے پانچ دنوں سے مسدود،بجلی وپانی سپلائی ٹھپ ،عوام مشکلات سے دوچار

11 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

حافظ قریشی
بنی // حالیہ بھاری برفباری کے سبب کٹھوعہ ضلع کی وادی بنی میں معمولات زندگی بری طرح متاثرہیں ۔ذرائع کے مطابق بنی کوجموں صوبہ کے دوسرے علاقوں کے ساتھ جوڑنے والی بنی بسولی سڑک مسلسل پانچویں روز بھی بند رہی ۔اس دوران گاڑیوں کی سڑک پر نقل و حرکت بھی ٹھپ رہی جس کے پیش نظرلوگوں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ ا۔ اگرچہ بھاری برف باری  کے بعد جہاں ایک طرف موسم خوشگوار ہواہے  تو وہیں دوسری جانب شدت سردی نے لوگوں کی مشکلات میں اضافہ کردیاہے۔ اس کے علاوہ بنی وادی کی تمام رابطہ سڑکیں ابھی بھی بند پڑی ہوئی ہیں جس کی وجہ سے لوگوں کاجینادوبھرہوگیا۔سڑک رابطے منقطع ہونے کے علاوہ پوری وادی میں بجلی سپلائی بھی گل ہے اورلوگ گھپ اندھیرے میں زندگی گزارنے پرمجبورہیں۔ذرائع نے بتایاکہ پانی سپلائی بھی بری طرح متاثرہے۔ علاقے میں بھاری برف باری کے سبب باغبانی اورزراعت سے جڑے بہت سے  لوگوں کو نقصان بھی پہنچاہے ۔ بنی کے کسانوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ علاقے میں کسانوں کی فصل کو بہت زیادہ نقصان ہوا ہے جو بھرپائی میں طویل عرصہ لگ جائے گا۔انہوں نے کہا کہ پھلدار پیڑ پودوں کو بھی بہت زیادہ نقصان ہوا ہے جو کہ برف باری سے ٹوٹ چکے ہیں جس کے پیش نظر بنی کے کسانوں نے ریاستی گورنر سے اپیل کی کے بنی میں کسانوں کی برباد ہوئی فصل کا معاوضہ دینے کیلئے اقدامات اٹھائے جائیں۔ مزیدتفصیلات کے مطابق  گزشتہ پانچ روزہ سے بنی ویلی گھپ اندھیرے میں ہے اور بجلی محکمہ کی کوششوں کے باوجود بھی بجلی کے نظام کو بحال نہیں کیا جاسکا ۔بنی کی بجلی سپلائی بسوہلی کے شیتل نگر سے بنی کیلئے پہاڑی علاقے سے ہو کر آتی ہے جو کہ لگ بھگ 35 کلو میٹر کا سارا ہی پیدل راستہ ہے اور اس علاقے میں لگ بھگ چار سے پانچ فٹ کی برفباری ریکارڈ درج کی گئی ہے جسکے نتیجے میں بجلی سپلائی کا بھاری نقصان ہوا ہے بجلی نظام کو درست کرنے میں بجلی محکمہ کے جے ای مظفر شیخ کے ہمراہ دیگر ملازمین پچھلے تین دن سے بھاری جدوجہد کر رہے ہیں لیکن اسکے باوجود بھی بجلی سپلائی کو یقینی بنانے میں کامیاب نہیں ہو سکے  بھاری برفباری کے باعث میں ملازمین کو بھاری مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ہے تو وہی محکمہ بجلی کا کہنا ہے کہ بجلی ڈھانچے کو کافی نقصان ہوا ہے ،جگہ جگہ پر پول اور تاروں کے ٹوٹ جانے سے بجلی کو درست کرنے میں ملازمین کو بھاری پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے تاہم بجلی کے نظام کوبحال کرنے میں کم از کم ایک ہفتے کا وقت لگ سکتا ہے لیکن بھاری دشواریوں کے باوجود بھی محکمہ بجلی کی پوری کوشش رہے گی کہ بجلی کے نظام کو جلد از جلد بحال کیا جائے گا ۔