آبی وسائل کا مناسب استعمال ضروری :گنائی

۔448 واٹر سپلائی سکیموں کا معاملہ محکمہ فائنانس کو ارسال

18 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

سرینگر//گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی نے ریاست میں موجودہ واٹر سپلائی سکیموں کو مزید مستحکم کرنے کیلئے مناسب اقدامات کرنے پر زور دیا ہے تا کہ پینے کے پانی کی کمی کو دور کیا جا سکے ۔ خورشید احمد گنائی نے ان باتوں کا اظہار صحت عامہ ، فلڈ کنٹرول اور آبپاشی محکموں کے افسران کی ایک میٹنگ میں کیا۔ میٹنگ میں سیکرٹری صحت عامہ فاروق احمد شاہ اور متعلقہ چیف انجینئروں کے علاوہ دیگر کئی افسران موجود تھے ۔ مشیر نے ریاست میں موجود آبی وسائل کے مناسب استعمال پر زور دیا ہے تا کہ ہر گھر کو پینے کا صاف پانی فراہم کیا جا سکے ۔ انہوں نے زیر تعمیر تمام واٹر سپلائی سکیموں کو وقتِ مقررہ کے اندر مکمل کرنیکی ہدایت دی ۔ مشیر نے کہا کہ التوا میں پڑی واٹر سپلائی سکیموں کی تکمیل کو ترجیح دی جانی چاہئیے تا کہ ان کیلئے واگذار کی گئی رقومات کا استعمال کیا جا سکے ۔ میٹنگ میں موجود افسران نے مشیر کو جانکاری دی کہ محکمہ نے 786.86 کروڑ روپے کی لاگت والی 448 واٹر سپلائی سکیموں کا معاملہ فائنانس ڈیپارٹمنٹ کو بھیجا ہے جن میں سے اعلیٰ اختیار والی کمیٹی نے 221 پروجیکٹوں کو منظور کیا ہے ۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ سرینگر میں پینے کے پانی کی قلت پر قابو پانے کیلئے واٹر سپلائی سکیم ٹنگنار کو مزید استحکام بخشنے کیلئے دردست لیا گیا ہے جس پر 148.37 کروڑ روپے کی لاگت آنے کا اندازہ ہے جبکہ جموں میں چناب دریا سے پانی کی سپلائی کو مزید فروغ دینے کیلئے 826 کروڑ روپے کا منصوبہ تیار کیا گیا ہے ۔ میٹنگ میں سوپور ، بارہمولہ ، اننت ناگ ، پونچھ ، راجوری اور سانبہ قصبوں کے علاوہ دیگر بڑے قصبوں میں پانی کی صورتحال کا جائیزہ لیا گیا ۔ میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ سٹیٹ سیکٹر کے تحت مختلف سکیموں کیلئے 1939.29 کروڑ روپے کی رقم منظور کی گئی ہے جس میں سے 50 فیصد رقم مختلف سکیموں پر خرچ کی جا رہی ہے ۔ میٹنگ میں جانکاری دی گئی کہ محکمہ فی الوقت 9292 دیہی بستیوں کو پینے کا پانی فراہم کر رہا ہے ۔ میٹنگ میں انسدادِ سیلاب کیلئے جاری کام کا بھی جائیزہ لیا گیا ۔ اس سلسلے میں متعلقہ افسران نے کہا کہ انسدادِ سیلاب پروجیکٹ کے بیشتر حصے مکمل کئے جا چکے ہیں ۔ میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ سیلاب کی روک تھام کیلئے شریف آباد ، نائید کھئی ، پادشاہی باغ ، رام باغ اور بمنہ میں فلڈ سپل چینل کی صفائی کا کام جاری ہے ۔ جبکہ بمنہ سے نائید کھئی تک فلڈ سپل چینل کی ری سیکشننگ کے کام پر 82 کروڑ روپے خرچ کئے جا رہے ہیں ۔

تازہ ترین