تازہ ترین

موجودہ صورتحال کیلئے بھاجپا۔پی ڈی پی حکومت ذمہ دار:آزاد

وکرمادتیہ سنگھ کی کانگریس میں شمولیت

12 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

نئی دہلی //کانگریس نے مرکزی اور ریاست کی سابق بی جے پی پی ڈی پی سرکار کو جموں کشمیر کے موجودہ حالات کے لئے ذمہ دار قرار دیتے ہوئے کہا کہ حالات یہاں تک خراب ہو گئے ہیں کہ لوگوں کو ووٹ ڈالنے میں ڈر لگنے لگا ہے ۔ راجیہ سبھا میں قائد حزب اختلاف غلام نبی آزاد نے کہا کہ اس سے قبل کانگریس نیشنل کانفرنس مخلوط حکومت نے ریاست کے حالات کو بہتر بنانے کی کوشش کی تھی جس کے نتیجہ میں لوگوں کا اعتماد بحال ہونے لگا تھا اور وہ پچھلے الیکشن میں بھاری تعداد میں جمہوری حق کے استعمال کے لئے آگے آئے تھے لیکن اب بندوق کے خوف سے کوئی ووٹ ڈالنے کی بھی ہمت نہیں کر پا رہا ہے ۔ انہوں نے الزام لگایا کہ بی جے پی پی ڈی پی سرکار اور مرکزی حکومت نے ریاست میں 1990کے حالات پیدا کر دئیے ہیں۔ وہ سابق پی ڈی پی لیڈر وکرمادتیہ سنگھ کی کانگریس میں شمولیت کے سلسلہ میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کر رہے تھے ۔کانگریس جنرل سیکرٹری اور ریاستی امور کی انچارج امبیکا سونی نے اس موقعہ پر کہا کہ کانگریس نے انتہائی مشکل حالات میں بلدیاتی انتخابات میں حصہ لیا ۔ تمام امیدواروں کی ستائش کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس سے زمینی صورتحال میں بدلائو آنے کا کوئی امکان نہیں ہے ۔ امبیکا سونی نے کہا کہ بی جے پی اب کس منہ سے کہے گی کہ’ اب حالات پوری طرح قابو میں ہیں‘۔اس سے قبل کانگریس میں شامل ہونے کے بعد وکرما دتیہ سنگھ نے پی ڈی پی پر ریاستی عوام کے ساتھ دغا کرنے کا الزام لگایا اور کہا کہ انہوں نے مفتی محمد سعید کی ایما پر پارٹی میں شمولیت کی تھی اور انہیں 2015میں قانون ساز کونسل کے لئے نامزد کیا گیا تھا لیکن بعد ازاں پی ڈی پی قیادت لوگوں کے ساتھ کئے گئے وعدے وفا کرنے میں ناکام رہی تو انہوں نے گزشتہ برس پارٹی اور کونسل رکنیت سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کر لیا۔ پارٹی میں وکرما دتیہ کا استقبال کرتے ہوئے غلام نبی آزاد نے کہا کہ ان کے آنے سے جموں میں کانگریس کو مزید تقویت حاصل ہوگی۔ اس سے قبل وکرما دتیہ سنگھ اپنے والد ڈاکٹر کرن سنگھ کے ہمراہ راہل گاندھی سے ملاقی ہوئے ۔