تازہ ترین

ذ ہنی صحت کا عالمی دن

سینٹرل یونیورسٹی آف کشمیر میں تقریب،نوجوانوں کو درپیش ذہنی مسائل اُجاگر

11 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

سرینگر//ذہنی صحت کے عالمی دن کے موقعہ پر سینٹرل یونیورسٹی آف کشمیر نے ’’دی اننرکال‘‘کے اشتراک سے یونیورسٹی کے مرکزی کیمپس تولہ مولہ میں ’’بدلتی دنیا میں نوجوان اور ذہنی صحت‘ موضوع پر یک روزہ بیداری پروگرام کامنعقد کیا۔اس موقعہ پر یونیورسٹی کے رجسٹرارپروفیسر فیاض احمد نکا،کونسلروسائیکیٹرسٹ ڈاکٹرعارف مغربی خان، ٹرانسفارمیشنل کوچ وندناارورا،ڈپٹی ڈائریکٹوریٹ اسٹوڈنٹس ویلفیئرڈاکٹر ظہورگیلانی،کارڈنیٹر ڈیپارٹمنٹ آف آئی ٹی  انجینئرظہوراحمد،سیکریٹری اننرکا ل عفان یسوی،فیکلٹی ممبران اور طلباء کی کثیرتعدادموجود تھی۔پروفیسر ظہور نکا نے اپنے افتتاحی خطاب میں طلباء کو تنائو کم کرنے کے طریقے بتائے۔انہوں نے طلباء پر زوردیا کہ وہ  ہمیشہ مثبت  رویہ اپنا کر مثبت رہا کریں ۔پروفیسر نکا نے کہا کہ اچھی ذہنی صحت سرگرم زندگی گزارنے کیلئے کلیدی اہمیت کی حامل ہے۔انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی نے ہمیشہ اپنے طلباء کوآزادانہ طور اظہارخیال کی آزادی دی ہے۔انہوں نے یہ بھی بتایا کہ یونیورسٹی کا نصاب اس طور ترتیب دیا گیا ہے کہ طالب علم تنائو کاشکار نہ ہوں۔ اس موقعہ پر ڈاکٹر عارف مغربی خان نے وادی میں ذہنی مسائل خاص طور سے نوجوانوں میں ذہنی مسائل کی تفصیلی جانکاری دی۔انہوں نے نوجوانوں کوذہنی بیماریوں کی علامات سے آگاہ کیااور ذہنی بیماریوں سے جڑے اوہام کے بارے میں بھی بتایا۔ اس موقعہ پر ایک کونسلنگ سیشن کابھی اہتمام کیا گیا ۔ڈپٹی ڈائریکٹر سٹوڈنٹس ویلفیئرڈاکٹرسید ظہرگیلانی اور کارڈنیٹر ڈیپارٹمنٹ آف آئی ٹی انجینئرظہوراحمد نے تقریب پر بولتے ہوئے نوجوانوں کو درپیش ذہنی مسائل پر توجہ مرکوزکرنے کی ضرورت اُجاگر کی۔شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے سیکریٹری اننرکال عفان یسوی نے کہا کہ نوجوانوں کو درپیش مسائل کے بارے میں بیداری پیدا کرنا اُن کی تنظیم کی متواتر کوشش رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ڈپریشن،ذہنی تنائو اوردیگر ذہنی بیماریوں کے ساتھ بدنامی یا کلنک کا ٹیکہ نہیں لگانا چاہیے۔