شہر کے متعدد علاقوں میں بدترین ٹریفک جام

سڑکوں اور چوراہوں پر پولیس رکاوٹوں کا شاخسانہ

10 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

سٹی رپورٹر
سرینگر// شہر کے متعدد علاقوں اور اہم سڑکوں پر منگل کو ہزاروں کی تعداد میں گاڑیاں بدترین ٹریفک جام میں پھنس گئیں جس کے نتیجے میں ان میں سوار مرد و زن اور بچوں وبززگوں کو زبردست ذہنی کوفت کا شکار ہونا پڑا ۔سول لائنز کے بڈشاہ چوک ،بٹہ مالو ،جہانگیر چوک اور ناز کراسنگ پر ٹریفک جام میں پھنسے لوگوں نے بتایا کہ شہر میں سہہ پہر4بجے تک معمول کے مطابق ٹریفک رواں دواں تھا تاہم اسکے بعد جہانگیر چوک سے بٹہ مالو تک زبردست ٹریفک جام ہوا اور اس طرح شہر کے متعدد علاقوں میں ہزاروں گاڑیاں ٹریفک جام میں پھنس گئیں ۔لوگوں نے الزام لگایا کہ بلدیاتی انتخابات کے پیش نظر شہر میں بیشتر سڑکوں اور چوراہوں پر پولیس نے رکاوٹیں کھڑا کی ہیں جس کی وجہ سے ٹریفک کی روانی رک جاتی ہے اور بعد میں ٹریفک جام ہوجاتا ہے ۔صنعت نگر ،مومن آباد ،رام باغ ،بربرشاہ ،جواہر نگر ،زیروبرج سمیت کئی اہم سڑکوں پر پولیس کی طرف سے سڑکوں کے بیچوں بیچ کھڑا کی گئی رکاوٹوں اور چیکنگ کی وجہ سے ان مقامات پر ٹریفک جام ہوجاتا ہے جو بعد میں دیگر علاقوں تک پھیل جاتا ہے اور اس طرح شہر میں بدترین ٹریفک جام ہوجاتا ہے۔اعجاز احمد نامی ایک شہری نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ باغات چوک سے صنعت نگر تک اس قدر ٹریفک جام تھا کہ اسے یہ منزل طے کرنے میں ایک گھنٹہ لگا۔انہوں نے بتایا کہ شام ساڑھے 4 بجے سے ساڑھے5بجے تک اسے متعدد مرتبہ گاڑی کو بند اور پھر چالو کرنا پڑا ۔بٹہ مالو میں شوکت احمد نامی ایک ڈرائیور نے بتایا کہ گاڑیوں میں سوار مرد وزن اور بچوں کو زبردست پریشانی ہوئی کیونکہ بیشتر لوگوں کو کافی دور جانا تھا اور وہ ایک گھنٹے تک مسلسل گاڑی میں یرغمال بنے رہے ۔ 

تازہ ترین