شمال و جنوب میں ہمہ گیر ہڑتال، کاروان امن بس ،انٹر نیٹ و ریل سروس معطل

پائین شہر میں بندشیں،قاضی یاسر سمیت درجنوں گرفتار، گیلانی، میر واعظ اور صحرائی خانہ نظر بند

9 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

بلال فرقانی
سرینگر// بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے کیخلاف مشترکہ مزاحمتی قیادت کی طرف سے دی گئی ہڑتال کے نتیجے میں کپوارہ سے قاضی گنڈ تک مکمل ہڑ تال سے زندگی کی رفتار تھم گئی۔حکام نے میرواعظ جنوبی کشمیر قاضی یاسر سمیت کئی مزاحمتی لیڈروں کو حراست میں لیا،جبکہ میر واعظ عمر فاروق اور محمد اشرف صحرائی کو خانہ نظر بند رکھا گیا۔ جنوبی کشمیر میں انٹرنیٹ سروس معطل رکھی گئی،جبکہ سرینگر اور بڈگام میں اس کی رفتار کم کی گئی۔

سرینگر و وسطی کشمیر

بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے میں مشترکہ مزاحمتی قیادت کی کال پر پیر کو وادی میں ہمہ گیر ہڑتال رہی ،جس کے دوران وادی کے شرق و غرب میں زندگی کی رفتار بھی تھم گئی۔ بیشتر آبادی نے گھروں میں ہی رہنے کو ترجیح دی ۔سرینگر میں دکانیں مکمل طور پر بند رہیں،جبکہ تجارتی و کاروباری مراکز بھی مقفل رہے،اور سڑکیں صحرائی مناظر پیش کر رہی تھیں۔پائین شہر میں سخت ترین بندشیں عائد کی گئی تھیں۔کئی مقامات پر خار دار تاریں بچھا کر سڑکوں کو بند کیا گیا تھا اور پرائیویٹ گاڑیوں کو چلنے کی اجازت نہیں دی جارہی تھی۔نوہٹہ، صفا کدل، زینہ کدل،نالہ مار، سکہ ڈافر،راجوری کدل،چھتہ بل،قمرواری،حول، اورپاقئین شہر کے دیگر علاقوں میں بندشیں عائد رہیں۔ضلع بڈگام میں بھی مکمل اور ہمہ گیر ہڑتال کی وجہ سے عام زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی۔بیروہ،چاڈورہ،خان صاحب،چرار شریف،کنی پورہ ، ماگام،مازھامہ، آری پتھن،کھاگ، پوشکرمیں تاجروں اور ٹرانسپورٹروں نے من و عن عمل کرکے مکمل ہڑتال کی ۔نامہ نگار ارشاد احمد کے مطابقگاندربل کے تولہ مولہ، بیہامہ، لار، منی گام،صفا پورہ اور دیگر علاقوں میں بھی اسی طرح کی صورتحال نظر آئی۔ نامہ نگار غلام نبی رینہ کے مطابق کنگن کے کلن، گنڈ، زبرون، ٹھون، سبز باغ، کچہ یار کے علاقوں میں بھی مکمل ہڑتال کی گئی۔

 شمالی کشمیر 

فیاض بخاری کے مطابق بارہمولہ میں ہڑتال کے دوران تمام بازار اور کاروباری و تجارتی مرکز بند رہے،جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کی نقل و حمل بند رہی۔غلام محمد کے مطابق  حساس ضلع سوپور میں بھی مکمل ہڑتال کی گئی جس کے دوران عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی۔پٹن،پلہالن،رفیع آباد،  شیری،بونیار،ٹنگمرگ، چندی لورہ،درورو،ریرم ،کنزر،دھوبی وان، چیچلور میں بھی مکمل ہڑتال سے عام زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی۔بانڈی پورہ میں بھی مکمل ہڑتال کی گئی۔ اس دوران کاروباری و تجارتی سرگرمیاں بند رہیں اور ٹرانسپورٹ بند رہا۔ حا جن ، سو نا و ا ر ی ،اجس،نائد کھے، سمبل،نسبل،شلوت،صدر کوٹ بالا، کلوسہ، وٹہ پورہ، آلوسہ، اشٹنگو، کہنو سہ سمیت دیگرعلاقوں میں دکانیں مکمل طور مقفل رہیں ۔ نامہ نگار اشرف چراغ کے مطابق سرحدی ضلع کپوارہ میں بھی مکمل ہڑتال رہی۔ اس دوران لنگیٹ،ترہگام،لال پورہ، سوگام،کرالہ پورہ سمیت دیگر علاقوں میں اضافی فورسز و پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا گیا تھا۔ ہڑتال کی وجہ سے عام زندگی پٹری سے نیچے اتر گئی۔ دکانیں،تجارتی و کاروباری مراکز اور نجی دفاتر مقفل رہیں،جبکہ سڑکوں سے ٹریفک دور رہا۔ 

جنوبی کشمیر

جنوبی قصبوں اور تحصیل ہیڈکوارٹروں میں مکمل ہڑتال اور سیول کرفیو کی وجہ سے کاروباری اور دیگر سرگرمیاں مفلوج رہیں۔ پلوامہ میں مکمل ہڑتال اور سیول کرفیو جیسی صورتحال کے بیچ دکانیں اور کاروباری ادارے بند رہے،جبکہ کاکہ پورہ،پانپور،نیوہ،اونتی پورہ، ترال،کھریو،لدھو اور راجپورہ سمیت دیگر علاقوں میں لوگوں نے گھروں میں رہنے کو ہی ترجیج دی۔ شوپیان میں ہڑتال کے نتیجے میں عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی۔کولگام سے نامہ نگارخالدجاویدکے مطابق ضلع کے محمد پورہ،نیلوہ،فرصل،اوکے،دمحال ہانجی پورہ ،کھڈونی،ریڈونی،پہلو،کھڈونی،کیموہ سمیت دیگر علاقوں میں ہڑتال کی وجہ سے عام زندگی کا کاروبار اتھل پتھل ہوکر رہ گئی۔اننت ناگ میں بھی مکمل ہڑتال سے عام زندگی معطل ہو کر رہ گئی۔نامہ نگار ملک عبدالسلام کے مطابق ہڑ تال کی وجہ سے ہر قسم کی سرگر میاں متاثر رہی اور لوگوں نے زیادہ ترگھروں میں ہی رہنے کو ترجیح دی جس کی وجہ سے شہر میں خاموشی چھائی رہی ۔ ضلع کے بجبہاڑہ،آرونی،سنگم، کھنہ بل،دیلگام،مٹن،سیر ہمدان سمیت دیگر علاقوں میں مثالی ہڑتال اور علامتی سیول کرفیو دیکھنے کو ملی۔ڈورو ،ویری ناگ ،قاضی گنڈ اورکوکر ناگ میں مکمل ہڑتال رہی جس دوران تمام دکانیں بند رہی جبکہ سڑکوں سے ٹریفک غائب رہا۔

مزاحمتی لیڈرشپ کا کریک ڈائون

انتخابات کے پیش نظر بیشتر مزاحمتی لیڈروں اور کارکنوں کو کئی روز قبل ہی حراست میں لیا گیا۔ جنوبی کشمیر میں پولیس نے امت اسلامی کے سربراہ اور میرواعظ جنوبی کشمیر قاضی یاسر کو پیر کی صبح گھر سے حراست میں لیااور پولیس تھانہ صدر پہنچایا گیا۔12گھنٹوں کے دوران ان کے گھر پر یہ دوسرا چھاپہ تھا۔ پولیس نے قاضی یاسر کے گھر سے وہ بیلٹ بکس بھی ضبط کئے،جو انہوں نے’’نمائشی ریفرنڈم‘‘ کیلئے گھر میں رکھے تھے۔اس دوران پولیس نے دوران شب مائسمہ میں حریت(ع) لیڈر انجینئر ہلال احمد وار کے گھر پر بھی چھاپہ مارا اور انکی گرفتاری عمل میں لائی۔پولیس نے محمد اشرف لایا اور تاشوق احمدبانڈے کو بھی حراست میں لیا۔ محمد اشرف صحرائی کو گھر میں نظر بند رکھا گیا،جبکہ میرواعظ عمر فاروق کو بھی ایک روز قبل خانہ نظر بند کیا گیا۔ سید علی گیلانی مسلسل خانہ نظر بند رہے۔ محمد یاسین ملک کو کئی روز قبل  ہی گرفتار کیا گیا تھا،جبکہ محمد یوسف نقاش،حکیم عبدالرشید،میر حفیظ اللہ ،محمد یاسین عطائی،امتیاز حیدر،محمد یوسف بٹ،بشیر احمد بٹ سمیت درجنوں کارکن پہلے ہی نظر بند ہیں۔

ریل و انٹرنیٹ سروس معطل

انتظامیہ نے بلدیاتی انتخابات میں ووٹنگ کے پیش نظر جنوبی کشمیر میں انٹرنیٹ سروس معطل کی،جبکہ وسطی کشمیر میں نیٹ  ورک کی رفتار کو کم کیا گیا۔ادھر کاروان امن بس سروس کو بھی معطل کیا گیا۔ بارہمولہ،بانہال ریل سروس بھی معطل رکھی گئی۔ 
 

 

تازہ ترین