بانڈی پورہ اور باغ مہتاب میں جھڑپیں

بھاجپا امیدوار اور ایک خاتون مضروب

9 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

عازم جان+بلال فرقانی
بانڈی پورہ+سرینگر //بلدیاتی انتخابات میں ووٹنگ کے د وران سرینگر کے باغ مہتاب اور بانڈی پورہ میں پر تشدد جھڑپیں ہوئیں جن کے دوران ایک خاتون پیلٹ لگنے سے مضروب ہوئی جبکہ بانڈی پورہ میں ہی ایک بھاجپا امیدوار کے قافلے پر پتھرائو کیا گیا جس سے وہ شدید زخمی ہوا۔اس دوران بانڈی پورہ میں ہی ایک پرزائڈنگ آفیسر کو معطل کیا گیا۔میونسپل کمیٹی بانڈی پورہ کیلئے ہورہی ووٹنگ کے دوران وارڈنمبر15کیلئے بھاجپااُمیدوارعادل علی بہرئوولدعلی محمدساکن پلان بانڈی پورہ جب ووٹ ڈالنے کیلئے جارہاتھاتوداچھی گام میں قائم پولنگ بوتھ کے نزدیک کچھ لوگوں نے سنگباری کی ،جسکے نتیجے میں بھاجپااُمیدوارپتھرلگنے سے زخمی ہوگیا۔تاہمپولیس کا کہنا ہے کہ بانڈی پورہ قصبہ کے پلان علاقہ میں بھاجپاسے وابستہ ایک کارکن کوپتھرلگا۔ اس دوران لنک ریشی پورہ میں نوجوانوں اور فورسز کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔نوجوانوں نے فورسز پر سنگبازی کی،جبکہ فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے پیلٹ چلائے۔ اس دوران ایک خاتون جس کی شناخت شبینہ اہلیہ جاوید احمد ڈار کے طور پر ہوئی،پیلٹ لگنے سے زخمی ہوئی۔شبینہ کو فوری طور پر علاج ع معالجہ کیلئے ضلع اسپتال بانڈی پورہ پہنچایا گیا۔ادھر ضلع کے پلان علاقے سے بھی فورسز اور نوجوانون کے درمیان جھڑپوں کی اطلاع موصول ہوئی ہیں۔سرینگر کے مضافاتی علاقوں باغ مہتاب اور ماچھواہ میں بھی نوجوانوں اور فورسز و پولیس کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔ نوجوانوں نے ریلوے پل کے نزدیک تعینات فورسز اہلکاروں پر سنگبازی کی،جبکہ فورسز نے نوجوانوں کو منتشر کرنے کیلئے ٹیر گیس گولوں کا استعمال کیا۔اس دوران کلوسہ بانڈی پورہ میں پرئزاڈنگ آفیسر کو چنائو نارمز کی خلاف ورزی کرنے کی پاداش میں معطل کیا گیا۔مذکورہ آفیسر نے ایک خاتون کو ایک ووٹر کیساتھ ووٹ ڈالنے کی جگہ تک جانے کی اجازت دی تھی۔
 

تازہ ترین