کشمیر کی مجموعی ابتری کے ذمہ دار

این سی، کانگریس، علیحدگی پسند اور دلی کی سرکاریں:گورنر

8 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
 سرینگر // ریاستی گورنر ستہ پال ملک نے کہا ہے کہ وادی میں پاکستان ، علیحدگی پسند، نیشنل کانفرنس اور کانگریس مسلسل تشدد کے ماحول کے ذمہ دار ہیں، تاہم انہوں نے بی جے پی اور پی ڈی پی کو اسکے لئے ذمہ دار نہیں ٹھہرایا۔گورنر نے ایک انٹر ویو میں کہا کہ نئی دہلی کی متواتر سرکاریں(بغیر واجپائی اور مودی کی) حتی کہ مین سٹریم سیاستی جماعتیں بھی کشمیر کی مجموعی ابتری کی ذمہ دار ہیں، جنہوں نے منفی رول ادا کیا جو موجودہ صورتحال کا باعث بنی ہے۔انہوں نے کہا کہ مفتی محمد سعید اور محبوبہ مفتی کے بغیر سبھی سیاسی جماعتوں کے لیڈران نے کشمیری عوام میں جھوٹی امیدیں پیدا کیں،سبھی سیاسی لیڈران نے دلی میں ایک بات کی اور سرینگر ائر پورٹ پر اترتے ہی دوسری بات کی، جس سے کشمیری عوام خاص کر نوجوانوں میں بد اعتمادی پیدا ہوئی۔گورنر نے کہا’’ نئی دہلی کی متواتر سرکاروں نے کشمیر کے انتخابات کو اپنی مرضی کے مطابق نتائج حاصل کرنے کیلئے منعقد کرائے اور یہاں کی مقامی حکومتوں کو دلی بدلی سے معرض وجود میں لانے کی حوصلہ افزائی بھی کی‘‘۔انکا کہنا ہے کہ وہ ریاست میں نئی سیاسی جماعتوں کے حق میں ہے کیونکہ اس سے لوگوں کو ایک وسیع میدان ملے گا تاکہ وہ محدود سیاسی جماعتوں کے جھوٹے بہکاوں میں نہ آ سکیں۔انہوں نے کہا کہ حریت کانفرنس اور پاکستان نوجوان نسل میں تشدد کو بھڑکانے میں ملوث ہیں۔پاکستان دہشت گردی پھیلانے کا کلیدی کھلاڑی ہے،دہشت گردی کچھ نوجوانوں میں پار ٹائم نوکری کی طرح بھی ہے،صرف 500روپے میں نوجوان سیکورٹی فورسز پر پتھر پھینکتا ہے۔
 

تازہ ترین