تازہ ترین

اسلامک یونیورسٹی میں سہ روزہ ورکشاپ،خورشید گنائی نے افتتاح کیا

25 ستمبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

 اونتی پورہ//گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی نے اسلامک یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی میں5 جی کمیونیکیشن ٹیکنالوجی سے متعلق تین روزہ ورکشاپ کا افتتاح کیا۔ورکشاپ میں کافی تعداد میں طُلاب اور ملک کے مختلف حصوں سے تعلق رکھنے والے ماہرین نے شرکت کی۔ورکشاپ کا انعقاد آئی یو ایس ٹی کے شعبۂ الیکٹرانکس اینڈ کمیونیکیشن انجینئرنگ نے کیا تھا۔مشیر موصوف نے آئی یو ایس ٹی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ انتہائی قلیل مدت کے دوران یہ یونیورسٹی ترقی کی راہ پر گامزن ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ اگر اسی تندہی اور لگن کے ساتھ ترقیاتی کام جاری رہے تو آئندہ برسوں کے دوران یہ یونیورسٹی ملک کے معروف ادروں میں شمار ہوگی۔مہمان خصوصی کی حیثیت سے طُلاب سے خطاب کرتے ہوئے خورشید گنائی نے اُن پر زور دیا کہ وہ محنت اور لگن کے ساتھ کام کر کے ایک بہتر سماج کی تعمیر میں اپنا کلیدی رول ادا کریں۔اس موقعہ پر انہوں نے کئی کامیاب سکالروں کا بھی ذکر کیا۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم کی بدولت کسی بھی شخصیت میں مثبت تبدیلی لائی جاسکتی ہے۔انہوں نے اساتذہ برادری پر زور دیا کہ وہ تعلیم کے معیار میں بہتری لانے کے لئے اپنا اہم رول ادا کریں۔انہوں نے کہا کہ اساتذہ اور طُلاب مل کر سماج میں ایک تعمیری رول ادا کرسکتے ہیں۔ورکشاپ کے موضوع پر بات کرتے ہوئے مشیر موصوف نے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی اور انٹر نیٹ کو موثر حکمرانی کی فراہمی میں نمایاں رول ادا کرنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ اس ٹیکنالوجی کی بدولت ہی دُنیا بھر میں کروڑوں لوگوں کی زندگیوں میں بدلاؤ آیا ہے۔انہوں نے اس موقعہ پر مفت گیٹ کوچنگ کلاسز اور سکول آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے طُلاب کے لئے پروجیکٹ ٹی ای کیو آئی پی۔تھرڈ کے تحت ایک کورس وئیر بھی جاری کیا۔اس موقعہ پر آئی یو ایس ٹی کے وائس چانسلر پروفیسر مشتاق احمد صدیقی نے زندگی کے مختلف شعبوں میں5 جی ٹیکنالوجی کے رول کو اُجاگر کیا۔بعد میں خورشید گنائی نے سکول رابطہ پروگرام کے تحت سکولی بچوں کے ساتھ بھی بات چیت کی۔یہ پروگرام آئی یو ایس ٹی کے ڈیزائین اینوویشن مرکز نے منعقد کیا تھا۔ورکشاپ میں ڈین اکیڈیمک افئیرس آئی یو ایس ٹی پروفیسر اے ایم شاہ، ڈین سکول آف انجنئیرنگ اینڈ ٹیکنالوجی پروفیسر اے ایچ مون، رجسٹرار، آئی یو ایس ٹی ڈاکٹر فاروق احمد میر،ملک کے مختلف حصوں سے آئے ریسورس پرسنز، ڈینس آف آئی یو ایس ٹی، متعدد محکموں کے سربراہاں، ریسرچ سکالر، طُلاب اور دیگران بھی موجود تھے۔