تازہ ترین

دراندازی کی133کوششیں:اہیر

۔69جنگجوجموں وکشمیرمیں داخل

8 اگست 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
 نئی دہلی//مرکزی وزارت ِ داخلہ نے کہا ہے کہ جون کے آخرتک دراندازی کی133کوششیں کی گئیں، اور اس دوران69جنگجوجموں وکشمیرمیں داخل ہوگئے۔ وزیرمملکت ہنس راج گنگارام اہیرنے پارلیمنٹ میں جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ سال 2017میں سرحدپارسے دراندازی کی 406 کوششیں کی گئیں ،جس کے دوران 123 جنگجوجموں وکشمیرمیں داخل ہوگئے ۔انہوں نے کہا کہ امسال جون تک لائن آف کنٹرول اوربین الااقوامی سرحد پر دراندازی کی 133کوششیں کی گئیں۔ انہوں نے کہاکہ ان کوششوں کے دوران سرحد پار سے 69 جنگجو جموں وکشمیرمیں داخل ہوگئے تاہم14جنگجودراندازی کی کوششوں کے دوران مارے گئے جبکہ50سے زیادہ جنگجوواپس بھاگ جانے پرمجبورہوگئے ۔انہوں نے کہا کہ کچھ مقامی لوگ جموں وکشمیرمیں جنگجوگروپو ں اورسرگرم جنگجوئوں کی مددکررہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ملی ٹنسی اورملی ٹنٹوں کی حمایت کرنے یاانھیں کسی بھی طرح کی مددفراہم کرنے والوں کیخلاف قوانین کے تحت کارروائی عمل میں لائی جاتی ہے ۔وزیرمملکت کاکہناتھاکہ جموں وکشمیرمیں مختلف سلامتی ایجنسیاں جنگجوئوں کیخلاف نبردآزماہیں جس وجہ سے سیکورٹی ایجنسیوں کوحالیہ برسوں میں بڑی کامیابیاں ملی ہیں ۔انہوں نے کہاکہ2014سے جولائی2018تک جموں وکشمیرمیں 694سرگرم جنگجوبشمول کئی اہم ملی ٹنٹ کمانڈرمارے گئے جبکہ اس دوران 368جنگجوئوں اوراُنکے معاونین کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ۔ رواں برس جولائی تک جموں وکشمیرمیں تشددکے 308واقعات رونماہوئے جبکہ اس دوران ہوئے90معرکوں میں 123جنگجومارے گئے،اور49سیکورٹی اہلکاربھی اپنی جانیں گنوابیٹھے۔انہوں نے کہاکہ فوج ،فورسزاورریاستی پولیس نے کشمیرمیں جنگجومخالف کارروائیاں کامیابی کیساتھ جاری رکھی ہوئی ہیں جبکہ دراندازی کی کوششوں کوناکام بنانے کیلئے فوج اوربی ایس ایف کے جوان اورافسرچوکنارہتے ہیں ۔ اہیرکاکہناتھاکہ 2017میں تشددکے191واقعات پیش آئے جس کے دوران 69انکائونٹروں میں112جنگجومارے گئے جبکہ39سیکورٹی اہلکاربھی ہلاک ہوئے ۔انہوں نے کہاکہ رواں برس ماہ رمضان کے دوران کشمیروادی میں تشددکے73واقعات پیش آئے جبکہ اس سے پہلے والے مہینے میں ایسے صرف34واقعات رونماہوئے تھے ۔ اہیرنے کہاکہ ماہ رمضان کے دوران کشمیرمیں23جنگجو،8سیکورٹی اہلکاراور3عام شہری تشددکے مختلف واقعات کے دوران اپنی جانیں گنوابیٹھے جبکہ اسے پہلے والے مہینے میں 14جنگجو،5سیکورٹی اہلکاراور8عام شہری تشددکی بینٹ چڑھ گئے ۔ وزیرمملکت نے بتایاکہ جموں وکشمیرمیں جنگجوئوں کی جانب سے سوشل میڈیاکااستعمال کئے جانے کے بارے میں حکومت باخبرہے اوراس ضمن میں قانون پرعمل درآمدکرانے والی متعلقہ ایجنسیاں ویب سائٹوں پرکڑی نظررکھے ہوئے ہیں اورجہاں ضرورت محسوس ہوتی ہے ،وہا ں لازمی کارروائی عمل میں لائی جاتی ہے۔